The news is by your side.

Advertisement

ایک سال سے روز جھیل میں غوطہ لگانے والے شخص کی بیوی نے اس کی وجہ بتا دی

مشیگن: امریکا میں ایک شخص مسلسل ایک سال سے روزانہ جھیل میں غوطہ لگاتا ہے، اور اس میں ناغہ نہیں کرتا۔

تفصیلات کے مطابق ایک امریکی شخص کو ’جھیل میں چھلانگ لگانے والے شخص‘ کا باقاعدہ خطاب مل گیا ہے کیوں کہ وہ روزانہ بلاناغہ مشیگن جھیل میں غوطہ لگا رہے ہیں۔

امریکی شہری ڈین اوکونر کا کہنا ہے کہ وہ علاج کے طور پر روزانہ جھیل میں نہاتے ہیں اور یہاں سے جسمانی طور پر بہتر ہو کر باہر آتے ہیں، ان کی بیوی مارگریٹ کا کہنا ہے کہ ان کے شوہر موسیقار ہیں، وبا کے بعد لاک ڈاؤن ہونے کے بعد افسردہ تھے، تو ڈین نے جھیل میں سکون اور اطمینان تلاش کر لیا۔

53 سالہ ڈین کا کہنا تھا کہ وہ لاک ڈاؤن میں شراب نوشی کے بعد دردِ سر اور دیگر کیفیات سے پریشان تھے، شروع میں کچھ عجیب لگا لیکن پھر جھیل میں نہانے کے بعد انھیں بہت اچھا محسوس ہوا، انھوں نے بتایا میرا دل و دماغ بہت صاف اور ہلکا ہو گیا، اس کے بعد میں نے جھیل میں غوطہ لگانے کو اپنی عادت بنا لیا۔

روز جھیل میں غوطہ لگانے کی عادت اتنی پکی ہو گئی ہے کہ ڈین اب خون جما دینے والی سردی میں بھی جھیل میں چھلانگ لگا دیتے ہیں۔

جھیل پر آنے والے لوگ بھی اب انھیں پہچاننے لگے ہیں، ڈین ان سے کہتے ہیں کہ یہاں نہانے سے ان کا دن روشن ہو جاتا ہے، کیوں کہ اس پُر آشوب دورمیں ہر ایک کو روشنی کی تلاش ہے۔

مارگریٹ نے بتایا کہ اب حال یہ ہے کہ ان کے شوہر ڈین کو دیکھ کر مزید کئی لوگ بھی ان کے ساتھ جھیل میں تیرتے ہیں اور روز مرہ مشکلات کو بھلا کر خوش رہنے کی کوشش کرتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں