امریکی صدر ٹرمپ کی سماجی ویب سائٹس کو دھمکیاں
The news is by your side.

Advertisement

امریکی صدر ٹرمپ کی سماجی ویب سائٹس کو دھمکیاں

واشنگٹن : امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے سماجی ویب سائٹس کودھمکیاں دینی شروع کردیں، ان کا کہنا ہے کہ سماجی ویب سائٹس کو احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدر کو آزاد سماجی ویب سائٹس بھی کَھنے لگی ہیں، ڈونلڈ ٹرمپ نے گوگل، ٹوئیٹر اور فیس بک کو تنبیہ کی ہے کہ یہ سماجی ویب سائٹس تکلیف دہ حدود میں داخل ہو رہی ہیں، سماجی ویب سائٹس کو بہت زیادہ احتیاط کرنا ہوگی۔

صدرٹرمپ کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ وہ اس معاملہ میں ضابطے متعارف کرنے پر غور کر رہے ہیں۔

دوسری جانب امریکی الزمات پر سماجی ویب سائٹس کا کہنا ہے کہ ان کے نہ تو سیاسی مقاصد ہیں اور نہ ہی وہ کسی سے تعصب رکھتے ہیں۔

اس سے قبل امریکی صدر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا تھا کہ گوگل پرٹرمپ نیوز سرچ کریں توفیک نیوزمیڈیا کی خبریں آتی ہیں، دوسرے لفظوں میں انہوں نے میرے اور دوسرے کے لئے دھاندلی کی۔

صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ تمام خبریں اور اسٹوریز بری ہوتی ہیں، فیک نیوز نمایاں ہے، ری پبلکن، کنزرویٹو اور فئیر میڈیا شٹ آؤٹ ہے، سب 96 فیصد غیر قانونی ہے۔

یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ سوشل میڈیا ‘رپبلکنز اور قدامت پرستوں کے بارے تعصب’ رکھتا ہے اور وہ ‘ایسا نہیں ہونے دیں گے۔’

ادھر گوگل کا کہنا تھا کہ اُس نے سیاسی نقطہ نظر کی بنیاد پر سرچ کے نتائج تبدیل نہیں کیے ہیں۔

خیال رہے سماجی رابطے کی ویب سائٹس میں ٹویٹر کو نمایاں مقام حاصل ہے، جس کا بڑے سبب ممتاز سیاسی شخصیات اور رہنماوں کی جانب سے اس سائٹ کا استعمال ہے۔

جو عالمی رہنما تواتر سے ٹویٹر استعمال کرتے ہیں، ان میں ڈونلڈ ٹرمپ، نریندر مودی، جسٹس ٹروڈو، طیب اردوان ، عمران خان نمایاں ہیں۔

چند تجزیہ کاروں کے مطابق ٹرمپ ٹوئٹر کے اسیر بن چکے ہیں اور اکثر غیرمتعلقہ معاملات پر بھی تواتر سے ٹویٹس کرتے نظر آتے ہیں، جس کی وجہ امریکی انتظامیہ کی سبکی ہوتی ہے۔

واضح رہے کہ صدرٹرمپ ٹویٹر پر بہت متحرک ہیں اوران کو فالو کرنے والوں کی تعداد چار کروڑسے زائد ہے، ٹرمپ نے 2009 میں ٹویٹر اکاؤنٹ بنایا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں