The news is by your side.

Advertisement

مشہور شاعر راحت اندوری بھی کورونا وائرس کا شکار

اندور : دنیا بھر خصوصاً پاکستان میں بے حد پسند کیے جانے والے بھارت کے مشہور شاعر راحت اندوری بھی کورونا وائرس کا شکار ہوگئے، انہوں نے عوام سے دعاؤں کی اپیل کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں بڑھتے ہوئے کورونا انفیکشن کے دوران مشہور و معروف شاعر راحت اندوری بھی اس وبا سے محفوظ نہیں رہ پائے ہیں۔ کورونا پازیٹو ہونے کی خبر انہوں نے خود اپنے ٹوئٹر پیغام کے ذریعہ دی ہے۔

انہوں نے ٹوئٹ میں لکھا ہے کہ کوویڈ کی شروعاتی علامتیں نظر آنے کے بعد کل میرا کورونا ٹیسٹ کیا گیا جس کی رپورٹ پازیٹو آئی ہے۔ آربندو اسپتال میں ایڈمٹ ہوں، دعا کیجیے جلد سے جلد اس بیماری کو شکست دے دوں۔“

ستر سالہ شاعر ڈاکٹر راحت اندوری نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں لوگوں سے دعا کی اپیل کرنے کے ساتھ ساتھ یہ بھی گزارش کی ہے کہ خیریت جاننے کے لیے انہیں فون نہ کیا جائے۔

انہوں نے اس حوالے سے لکھا ہے کہ میری ایک اور التجا ہے کہ مجھے یا گھر کے لوگوں کو فون نہ کریں، میری خیریت ٹوئٹر اور فیس بک پر آپ کو ملتی رہے گی۔

دوسری جانب راحت اندوری کے کورونا وبا میں مبتلا ہونے کی خبر سامنے آنے کے بعد سوشل میڈیا پر ان کی جلد صحت یابی کے لیے دعاؤں کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔

مدھیہ پردیش کے وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے بھی ان کی صحت یابی کے لیے دعا کی ہے، کچھ دن قبل ہی کورونا کو شکست دے کر اسپتال سے گھر لوٹنے والے شیوراج چوہان نے راحت اندوری کے تعلق سے ٹوئٹ کیا ہے کہ “مشہور شاعر راحت اندوری جی کے بیمار ہونے کی خبر ملی۔ ایشور سے ان کے جلد صحت یاب ہونے کی دعا کرتا ہوں۔

راحت اندوری نے اس ٹوئٹ پر اپنا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے شکریہ بھی ادا کیا اور لکھا کہ آپ کی دعاؤں اور تعاون کی ضرورت ہے میں اندور کے آربندو اسپتال میں ہوں۔

یکم جنوری 1950 کو بھارت میں پیدا ہونے والے راحت اندوری پیشے کے اعتبار سے اردو ادب کے پروفیسر رہ چکے بعد ازاں آپ نے کئی بھارتی ٹی وی شوز میں بھی حصہ لیا۔

ڈاکٹر راحت اندوری نے نہ صرف بالی ووڈ فلموں کے لیے نغمہ نگاری کی بلکہ گلوکاری کے کئی شوز میں بہ طور جج حصہ بھی لیا۔

نئی نسل عام طور پر ڈاکٹر راحت اندوری کو بطور شاعر ہی پہچانتی ہے، انہوں نے نوجوانوں کو کئی بنیادی باتیں بتائیں جو اُن کے فنی سفر، تلفظ اور گلوکاری میں معاون ثابت ہوتی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں