site
stats
پاکستان

حکومت نے باقر نجفی کمیشن رپورٹ میں تبدیلی کی، ڈاکٹرطاہرالقادری

qadri

اسلام آباد : پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا ہے کہ حکومت نےباقرنجفی کمیشن رپورٹ میں تبدیلی کی، رپورٹ میں ردو بدل ثابت ہوگیا تو تمہاری خیر نہیں، دونوں شریف بھائی اور رانا ثناءاللہ ماڈل ٹاؤن قتل عام کے ذمہ دارہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں میزبان کاشف عباسی سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ دیکھنا ہوگا کہ حکومت نے نجفی کمیشن رپورٹ میں ردو بدل تو نہیں کی کیونکہ رپورٹ کے صفحہ65کی پہلی سطر ردو بدل کا بھانڈا پھوڑتی ہے، صفحہ65کی پہلی سطر میں اجلاس کی تاریخ2017کی ڈال دی گئی ہے جس سے غالب گمان یہ ہے کہ یہ تاریخ بعد میں ڈالی گئی۔

سولہ جون2014کی میٹنگ کی تاریخ2017کیسےہوسکتی ہے، 16جون2014کی جگہ16جون2017غلطی سےنہیں ہوسکتا۔ ڈاکٹر طاہرالقادری نے شریف برادران کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر رپورٹ میں ردو بدل ثابت ہوگیا تو تمہاری خیرنہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم ہوم سیکریٹری سے رپورٹ پر تصدیقی دستخط چاہتے ہیں، رپورٹ میں قتل عام کے ذمہ داران کا بخوبی اندازہ ہوجاتا ہے، خود جسٹس نجفی نے کہا کہ حکومت نے ٹریبونل کو اختیارات نہیں دیئے، اختیارات نہ دینا،حقائق چھپاناذمہ داروں کا بتاتا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ شہبازشریف کا جھوٹ نجفی کمیشن رپورٹ نے عیاں کردیا، کوئی پولیس افسر یہ بتانے کو تیارنہیں کہ کس نے فائرنگ کےا حکامات دیے، اتنا بڑا ظلم ہوگیا اورکوئی افسر اپنی زبان کھولنے کو تیارنہیں۔

ظاہر ہے کسی بڑے طاقتورشخص کا نام چھپایا جارہا ہے، کس کے حکم پر ایکشن ہوایہ چھپانا وزیراعلیٰ پنجاب تک جاتا ہے، شہبازشریف نےپریس کانفرنس میں اپنے زبانی حکم کا ذکرنہیں کیا تھا، ایسا کیسے ہوسکتا ہے کہ وزیراعلیٰ منع کریں پھر بھی پولیس ایکشن ہوجائے؟

سربراہ عوامی تحریک نے کہا کہ ماڈل ٹاؤن قتل عام کے ذمہ دار دونوں شریف بھائی اور راناثنااللہ ہیں، بڑی ذمہ داری شہبازشریف پرعائد ہوتی ہے کیونکہ وہ وزیراعلیٰ ہیں، پولیس حکام کے تبادلے بھی بتارہے ہیں کہ حقائق سامنے نہ آئیں۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ حکام کے تبادلوں کا جواز بھی پیش نہیں کیا گیا، آئی جی کو کوئٹہ سے پنجاب منتقل کرنا رانا ثنااللہ کا کام نہیں انہیں شہبازشریف نےمنتقل کیا۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ دہشتگردی ن لیگ کا مائنڈ سیٹ ہے، دہشت گردوں کو پولیس کی وردی میں آپریشن کیلئے بلایا گیا تھا، آپریشن میں حصہ لینے والے دہشت گردوں کو وردیاں کس نے فراہم کیں؟۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top