The news is by your side.

Advertisement

سوڈیم کا “خیال” رکھیے

طبی محققین کے مطابق دماغ انسان کو بتاتا ہے کہ اس کے جسم کو پانی پینے کی ضرورت ہے۔

اسی طرح دماغ میں ایک ہارمون ہمارے گردوں کو بھی پیغام دیتا ہے کہ اب وہ اپنے مخصوص کام کے لیے پانی بچائے۔

ہمارے جسم کے کل وزن کا دو تہائی حصہ پانی ہی ہوتا ہے۔ پانی جسم سے فاضل اور خراب عناصر کو باہر نکالنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔

طبی سائنس کے مطابق انسانی جسم کے اندر ہونے والی کیمیائی تبدیلیاں بھی پانی کے بغیر ممکن نہیں۔

انسان پسینے، پیشاب اور سانس کے ذریعے پانی خارج کرتے ہیں اور پیاس لگنے پر جسم میں پانی کی کمی دور کرتے ہیں، لیکن اکثر لوگ پوچھتے ہیں کہ ایک صحت مند انسان کو دن بھر میں کتنے گلاس پانی پینا چاہیے؟

ہم نے سنا ہے کہ روزانہ آٹھ گلاس پانی پینا ضروری ہے، اور اسی طرح بعض لوگ زیادہ سے زیادہ پانی پینے پر زور دیتے ہیں، مگر سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ یہ درست نہیں ہے۔

طبی محققین کے مطابق روزانہ آٹھ گلاس پانی پینے سے جسم کو نقصان تو نہیں پہنچتا، لیکن طلب سے زیادہ پانی پینا چند نقصانات کا سبب بن سکتا ہے۔

ماہرین کے مطابق جسم کی طلب اور ضرورت کو نظرانداز کرکے زیادہ پانی پینے سے ہم سوڈیم کی کمی کا شکار ہو جاتے ہیں۔

سوڈیم ہمارے جسم کے لیے بہت ضروری ہے اور اس کی کمی سے دماغ اور پھیپھڑوں میں سوجن کا مسئلہ پیدا ہو جاتا ہے۔

طبی سائنس اور مستند تحقیقی اداروں کے ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ ثابت نہیں ہوا کہ ہمیں زیادہ سے زیادہ پانی پینا چاہیے۔ پانی اسی وقت پینا چاہیے جب پیاس محسوس کریں۔

اسی طرح جلد کی شادابی اور خوب صورتی برقرار رکھنے کے لیے زیادہ پانی پینے کو بھی بعض سائنس دانوں نے تحقیق کے بعد مفروضہ قرار دیا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں