The news is by your side.

Advertisement

دبئی پولیس کا معذور قیدی کو مصنوعی ٹانگیں اور الیکٹرک ویل چیئر کا تحفہ

دبئی : اماراتی پولیس نے خوشی کے عالمی دن کے موقع پر دونوں ٹانگوں سے معذور قیدی کو مصنوعی ٹانگیں اور ویل چیئر تحفے میں دے دی۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کی ریاست دبئی کے پولیس حکام نے العویر جیل میں قید ذیابطیس کے باعث معذور ہونے والے قیدی کو مصنوعی ٹانگیں لگاکر انسانیت کی مثال قائم کردی۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ سیاحت کی غرض سے دبئی کا دورہ کرنے والے 60 سالہ عرب شہری کی ذیابطیس 2015 میں ایک ٹانگ ضائع ہوگئی تھی اور دوسری ٹانگ گزشتہ جیل میں ضائع ہوئی تھی جب انہیں دبئی میں غیر قانون قیام کرنے جرم میں گرفتار کیا گیا تھا۔

خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ عرب شہری کی 20 مارچ خوشی کے عامی دن کے موقع پر دبئی پولیس نے قیدی کو مصنوعی ٹانگیں لگاواکر حیران کردیا۔

دبئی پولیس کے ڈائریکٹر بریگیڈیئر علی الشمالی کا کہنا تھا کہ دبئی پولیس ہمیشہ قیدیوں میں خوشی پھیلاتی ہے، دبئی پولیس کی انسانی ہمدردی کمیٹی نے قیدی کی امداد کےلیے مصنوعی ٹانگیں خریدی اور برقی ویل چیئر خریدی اور قیدی کو تحفۃً پیش کی۔

اماراتی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ مصنوعی ٹانگیں اور الیکڑیک وئیل چیئر 35 ہزار 880 درہم میں خریدی گئیں تھی۔

بریگیڈیئر علی الشمالی کا کہنا تھا کہ قیدی کی معاونت دبئی پولیس کے کمانڈر انچیف میجر جنرل عبداللہ خلیفہ المرّی کے احکامات پر کی گئی ہے۔

عبداللہ خلیفہ المّری نے جیل کا دورہ کرتے ہوئے مذکورہ قیدی سے ملاقات کی تھی جو ذیابطیس کے باعث اپنی دونوں ٹانگیں کھوچکا تھا، اس لیے ہم سے فیصلہ کیا کہ انسانیت کی خاطر قیدی کی مدتت کی جائے گی۔

اماراتی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ مصنوعی ٹانگیں اور ویل چیئر حاصل کرنے والے قیدی نے دبئی پولیس حکام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ جیل میں انسانی رویہ ناقابل یقین ہے جو کسی بھی ملک میں نظر نہیں آسکتا‘۔

مزید پڑھیں : دبئی پولیس نے 6 سالہ بچی کے گردے تبدیل کرواکر نئی زندگی دے دی

اماراتی خبر رساں دارے کا کہنا ہے کہ دبئی پولیس کا انسانی امداد کے لیے کام کرنے شعبے نے گزشتہ برس 5 ہزار 485 قیدیوں کی امداد کےلیے 81 لاکھ درہم خرچ کیے تھے۔

اس امداد میں قیدیوں کے بچوں کی اسکول کی فیس، اہلخانہ کے گھر کا کرایہ، دیگر ضروریات زندگی کا سامان مہیا کرنا، میڈیکل معاملات اور خون بہا کی مد میں رقم خرچ کی گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں