The news is by your side.

Advertisement

پاکستان تحریک انصاف کے 19 منحرف ارکان نے الیکشن کمیشن میں جواب جمع کرادیے

اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف کے 19 منحرف ارکان نے الیکشن کمیشن میں جواب جمع کرادیے، پی ٹی آئی وکیل کے مہلت مانگنے پر سماعت منگل تک ملتوی کردی گئی۔

منحرف ارکان کیخلاف ریفرنسز پر الیکشن کمیشن میں سماعت۔۔ منحرف ارکان نے جواب جمع کرادیے۔۔ تحریک انصاف کے وکیل فیصل چوہدری کی جانب سے جواب پڑھنے کیلیے مہلت مانگنے پر سماعت منگل تک ملتوی۔۔ چیف الیکشن کمشنر بولے۔۔ لگتا تھا مہلت منحرف ارکان کے وکلا مانگیں گے۔۔ لیکن یہاں تو آپ نے ہی مہلت مانگ لی
تحریک انصاف کے منحرف اراکین پارلیمنٹ کے خلاف ریفرنس کی سماعت آج ہوگی، چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں تین رکنی بنچ ریفرنس کی سماعت کرے گا، پی ٹی آئی کے بیس منحرف اراکین کو پیش ہونے کی ہدایت، چیف الیکشن کمشنر نے تیس روز میں ریفرنس کا فیصلہ کرنے کاعندیہ دے رکھا ہےسلام

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے منحرف ارکان کے خلاف ریفرنسز پر الیکشن کمیشن میں سماعت ہوئی ، چیف الیکشن کمشنرکی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے سماعت کی۔

منحرف رکن نور عالم خان کے وکیل نے جواب جمع کرایا ، جس پر چیف الیکشن کمشنر نے سوال کیا کیا آپ آج دلائل دیں گے، جس پر وکیل نور عالم خان نے کہا کہ جی میں دلائل دوں گا۔

منحرف ارکان فرخ الطاف، عاصم نذیر نے جواب جمع کرا دیا، چیف الیکشن کمشنر نے کہا کل دونوں فریقین کے دلائل سنیں گے، جس پر وکیل منحرف ارکان کا کہنا تھا کہ اگر جواب الجواب آیا توتیاری کےلیےوقت درکارہوگا۔

دوران سماعت منحرف ارکان افضل خان دھاندلہ، نواب شیر وسیر، راجہ ریاض ، احمد حسین ڈھیر، رانا قاسم نون، غفار وٹو ، مخدوم سمیع الحسن گیلانی، مبین احمد، باسط سلطان ، عامر گوپانگ، اجمل فاروق کھوسہ، ریاض مزار ، رمیش کمار،جویریہ ظفر، وجیہہ قمر نزہت پٹھان نے بھی جواب جمع کرا دیا۔

وکیل عامر لیاقت نے بتایا کہ عامر لیاقت حسین جواب پر دستخط کے لیے نہیں پہنچ سکے، آج ہی دستخط کرا کر جواب جمع کرا دیں گے۔

وکیل پی ٹی آئی فیصل چوہدری نے کہا جتنے جواب آ چکے ہیں ایک دن میں پڑھ کرجواب دینا مشکل ہوگا، مناسب ہوگا کہ دلائل منگل کیلئے رکھ لیں۔

جس پر ممبر بلوچستان شاہ محمد جتوئی نے کہا 14 مئی تک کمیشن نے فیصلہ کرنا ہے، چیف الیکشن کمشنر کا کہنا تھا کہ منگل تک دلائل مکمل کر لیں تاکہ فیصلے کےلیےوقت مل سکے۔

وکیل پی ٹی آئی نے کہا کہ ایم پی ایز کے کیس میں وکالت نامہ جمع کرانا چاہتے ہیں، عدم اعتماد جیسی صورتحال پنجاب اسمبلی میں بھی پیش آئی،عثمان بزدار کا استعفی متنازع ہے۔

فیصل چوہدری کا مزید کہنا تھا کہ نئےوزیراعلی ٰکےالیکشن کیلئے پی ٹی آئی ارکان کو ورغلایا گیا،پنجاب اسمبلی میں منحرف ارکان نے ووٹ ڈال دیے ہیں، قومی اسمبلی کے منحرف ارکان کا کیس چوٹی سرکرنے کے مترادف ہے۔

ممبر سندھ نثار درانی نے کہا پنجاب اسمبلی میں ووٹ ڈلا اور رجیم تبدیل ہوگئی، جس پر وکیل پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ رجیم تبدیل ہونے کے متاثرہ فریق درخواست گزار ہیں،اسمبلی سے پہلے نجی ہوٹل میں وزیراعلی کا الیکشن کروایا گیا، قانونی تقاضے پورے کرکے ریفرنس 20 اپریل کو الیکشن کمیشن پہنچے۔

فیصل چوہدری کا کہنا تھا کہ آرٹیکل 63 کی خلاف ورزی کا تاریخی کیس ہے، ووٹ ڈل گیا تو مزید کسی جواب کی ضرورت نہیں، جس پرممبر بلوچستان شاہ محمد جتوئی نے کہا آپ نے تو آج ہی دلائل مکمل کر لیے ہیں۔

الیکشن کمیشن نے کہا کیس میں تاخیر نہ کریں، جس پر فیصل چوہدری کا کہنا تھا کہ پیرکوہائیکورٹ میں پیش ہونا ہے، ساڑھے 11بجے کا ٹائم کر دیں۔

بعد ازاں الیکشن کمیشن نے کیس کی سماعت منگل تک ملتوی کر دی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں