انتخابات میں مبینہ دھاندلی: حکومتی اور اپوزیشن اراکین پر مشتمل 30 رکنی کمیٹی تشکیل -
The news is by your side.

Advertisement

انتخابات میں مبینہ دھاندلی: حکومتی اور اپوزیشن اراکین پر مشتمل 30 رکنی کمیٹی تشکیل

اسلام آباد : وفاقی حکومت نے عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کی شکایات کے جائزے کیلیے کمیٹی تشکیل دے دی ہے جس میں حکومتی اور اپوزیشن اراکین کو برابر نمائندگی دی گئی ہے، کمیٹی ٹرمز آف ریفرنس تیار کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق انتخابات میں مبینہ دھاندلی سے متعلق30رکنی پارلیمانی کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے، اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے تیس رکنی کمیٹی کی منظوری دی ہے، جس کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا، کمیٹی میں قومی اسمبلی کے20اورسینیٹ کے دس ارکان شامل ہیں۔

پارلیمانی کمیٹی میں اپوزیشن اور حکومتی ارکان کو برابر کی نمائندگی دی گئی ہے، مذکورہ کمیٹی میں اعظم سواتی، فروغ نسیم، بیرسٹرسیف، خوش بخت شجاعت، نعمان وزیر رضاربانی، جاوید عباسی، رحمان ملک، عثمان کاکڑ، کلثوم پروین شامل ہیں۔

اس کے علاوہ خورشید شاہ، پرویز اشرف اور نوید قمر، احسن اقبال، راناثناءاللہ، راناتنویر، مرتضیٰ جاوید عباسی پارلیمانی کمیٹی میں شامل ہیں، دیگر ارکان میں اختر مینگل اور جمعیت علمائے اسلام کے مولانا عبدالواسع، پرویزخٹک، شیریں مزاری، شفقت محمود، علی محمدخان، عامرڈوگر بھی کمیٹی کا حصہ ہوں گے۔

حکومت کی جانب سے پرویزخٹک پارلیمانی کمیٹی کے سربراہ نامزد کیے گئے ہیں، ذرائع کے مطابق کمیٹی کے پہلے اجلاس میں سربراہ کا باضابطہ فیصلہ ہوگا اور ٹی او آرز طے کیے جائیں گے اور ٹی او آرز کی روشنی میں پیشرفت کی جائے گی ۔

اس کے علاوہ انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کیلئے کمیٹی ٹرمز آف ریفرنس تیار کرے گی، پارلیمانی کمیٹی اتفاق رائے سے طے پانے والی مدت کے اندر رپورٹ پیش کرے گی۔

واضح رہے کہ پچیس جولائی کو ہونے والے عام انتخابات کی شفافیت پر سوال اٹھاتے ہوئے قومی اسمبلی کے پہلے اجلاس میں حزب اختلاف کی جماعتوں نے مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیشن بنانے کا مطالبہ کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں