The news is by your side.

عوام کا لہو نچوڑنے والی بجلی کمپنیاں سرکاری اداروں سے اپنی رقم نکلوانے میں ناکام

اسلام آباد: ملک بھر کی بجلی کمپنیاں عوام کا لہو نچوڑنے کے بعد سرکاری اداروں سے وصولیاں کرنے میں ناکام ہیں، مختلف سرکاری اداروں پر بجلی کمپنیوں کی اربوں روپے کی رقم واجب الادا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بجلی کمپنیاں سرکاری اداروں سے وصولیاں بہتر کرنے میں ناکام ہوگئیں، ایک سال میں وفاقی و صوبائی حکومتوں کے واجبات میں مزید 309 ارب روپے کا اضافہ ہوگیا۔

حال ہی میں جاری کی گئی ایک دستاویز میں کہا گیا کہ 30 جون 2022 تک بجلی کمپنیوں کے واجبات 1 ہزار 498 ارب تک تھے، جبکہ 2021 کے اختتام تک واجبات 1 ہزار 189 ارب روپے تک تھے۔

دستاویز کے مطابق کوئٹہ کی بجلی کمپنی کیسکو کے مختلف اداروں پر 460 ارب 95 کروڑ 50 لاکھ روپے کے واجبات ہیں۔

گوجرانوالہ کی گیپکو نے وزارتوں اور سرکاری اداروں سے 454 ارب روپے وصول کرنے ہیں، سکھر کی سیپکو کے 172 ارب 23 کروڑ 50 لاکھ روپے، پشاور کی پیسکو کے 165 ارب 78 کروڑ 15 لاکھ روپے اور لاہور کی لیسکو کے مختلف سرکاری اداروں پر 163 ارب 13 کروڑ روپے کے واجبات ہیں۔

حیدر آباد کی حیسکو کو 139 ارب 93 کروڑ 20 لاکھ روپے، ملتان کی میپکو کو 100 ارب 75 کروڑ 34 لاکھ روپے اور وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی آئیسکو کو 100 ارب 75 کروڑ روپے کے واجبات مختلف صوبائی و وفاقی سرکاری اداروں سے وصول کرنے ہیں۔

قبائلی علاقوں کی ٹیسکو کے واجبات 75 ارب 98 کروڑ روپے اور فیصل آباد کی فیسکو کے واجبات کی رقم 73 ارب 15 کروڑ 75 لاکھ روپے ہے جو مختلف وفاقی و صوبائی سرکاری اداروں پر واجب الادا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں