The news is by your side.

Advertisement

ترک صدر کے اقدامات تکلیف دہ نتائج کا باعث بن سکتے ہیں، امریکی سینیٹر

واشنگٹن/انقرہ : امریکی سینیٹر نے طیب اردوآن کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ترک صدر کے اقدامات ترکی کےلیے تکلیف دہ نتائج کا باعث بن سکتے ہیں، ترکی غلط سمت کی طرف جارہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی سینیٹ کی خارجہ تعلقات کمیٹی نے ترکی پر پابندیاں عائد کرنے کے لیے ایک بل پر رائے شماری کے بعد ریپبلکن سینیٹر جیمز رچ نے کہا ہےکہ ترک صدر رجب طیب اردوآن نے ترکی کو خراب راستے پرڈال دیا ہے۔

مسٹر رچ نے ایک بیان میں کہا کہ صدر اردوآن کے فیصلے اور اقدامات ترکی کے لیے تکلیف دہ نتائج کا باعث بن سکتے ہیں، ترکی غلط سمت کی طرف جارہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ انقرہ کے خلاف پابندیوں کے بل پر رائے شماری کے بعد ترک حکام کو اپنے فیصلوں پر نظرثانی کا موقع ملے گا۔

جیمز رچ کا کہنا تھا کہ ترکی ایک خودمختار ریاست ہے اور (ترک عہدیدار) وہی کام کرسکتے ہیں جو انہیں مناسب نظر آتے ہیں لیکن ان کے ہر فیصلے کا نتیجہ ضرور نکلنا چاہیئے اردوآن کے حالیہ فیصلے ترکی کے لیے برے اور تکلیف دہ نتائج کا سب بن سکتے ہیں۔

امریکی سینیٹر کا کہنا تھا کہ تُرکی گذشتہ برسوں میں ہمارا ایک بہت بڑا اتحادی رہا ہے لیکن صدر اردوآن نے ملک کو ایک خراب راستے پر گامزن کردیا ہے وہ نیٹو سے الگ اور روس کے قریب ہے۔ اگر وہ یہ کرنا چاہتا ہے تو وہ آزاد ہے لیکن اس کے تکلیف دہ نتائج بھی برآمد ہوسکتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں