The news is by your side.

Advertisement

اینٹی ریپ کرائسز سیل کے قیام کی سمری وزیر اعظم کو ارسال

اسلام آباد : اینٹی ریپ کر ائسز سیل کے قیام کی سمری وزیر اعظم کوارسال کردی گئی ، سیل 6 گھنٹے کے اندرریپ کیس پر بغیرتاخیر طبی معائنہ یقینی بنائے گا۔

تفصیلات کے مطابق وزارت قانون نے اینٹی ریپ کر ائسز سیل کے قیام کی سمری وزیر اعظم کوارسال کردی ، سمری کی منظوری وزیراعظم عمران خان دیں گے۔

سمری میں کہا گیا ہے کہ اینٹی ریپ کر ائسز سیل کا قیا م عورتوں،بچو ں کی حفا ظت کیلئےاہم قدم ہے، سیل 6گھنٹےکےاندرریپ کیس پربغیرتاخیرطبی معا ئنہ یقینی بنائے گا جبکہ اینٹی ریپ کر ائسز سیل کے پاس ایف آئی آردر ج کر انے کا اختیا ر ہو گا۔

گذشتہ روز قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے قانون نے اینٹی ریپ بل2020 منظور کیا تھا، وزیرقانون و انصاف فروغ نسیم نے ‏کہا کہ ہمارے اینٹی ریپ بل کو دنیا بھر میں سراہا جا رہا ہے ، اپوزیشن سےگزارش ہےکہ اینٹی ریپ ‏بل کی مخالفت نہ کرے۔

وزیرقانون کا کہنا تھا کہ کرمنل لا ترمیمی بل کےتحت ریپ کےعادی مجرم کو نامرد کیا جائے گا، عمرقید کاٹ کر ‏جب ریپ کرنے والا دوبارہ جرم کرے گا تو نامرد کیا جائے گا۔

یاد رہے مارچ میں وفاقی حکومت نے زیادتی کے بڑھتے ہوئے واقعات پر ضلعی سطح پر اینٹی ریپ کرائسز سیل تشکیل دینے کا فیصلہ کیا تھا ، فیصلے کے مطابق ہر ضلع کا ڈپٹی کمشنر اینٹی ریپ کرائسز سیل کا سربراہ ہوگا۔

اینٹی ریپ کرائسز سیل بنانے کے لیے وزارت قانون و انصاف نے اینٹی ریپ آرڈیننس عمل درآمد کمیٹی قائم کی تھی، یہ کمیٹی زیادتی سے متاثرہ افراد کی معاونت کرے گی، اس کا سیل ہر ڈی ایچ کیو میں بنایا جائے گا جس میں سپورٹ آفیسر عمل درآمد کمیٹی تعینات کرے گی، اینٹی ریپ کرائسز سیل میں متعلقہ ضلع کا پولیس اور ہیلتھ آفیسر بھی شامل ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں