The news is by your side.

Advertisement

آکسفورڈ کی آسٹرازینیکا ویکسین محفوظ اور مؤثر قرار

نیدر لینڈ : یورپین میڈیسن ایجنسی نے ابتدائی طور پر آسٹرازینکا کی کورونا ویکسین کو محفوظ قرار دے دیا۔ ڈبلیو ایچ او نے بھی ویکسین استعمال جاری رکھنے کی ہدایت جاری کی ہے۔

یورپین میڈیسن ریگولیٹری ایجنسی نے تازہ جائزہ رپورٹ جاری کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ آسٹرا زینیکا مکمل محفوظ ویکسین ہے اس کے استعمال سے خون کا لوتھڑا نہیں بنتا۔

یورپین میڈیسن ایجنسی کا ابتدائی طور پرآسٹرازینکا کی کورونا ویکسین کو محفوظ قرار دیتے ہوئے کہنا ہے کہ کسی قسم کے شواہد نہیں کہ جسم میں ویکسین سے خون کی گلٹیاں بنیں ، خدشات سے زیادہ ویکسین کے فوائد ہیں۔

یورپین میڈیسن ایجنسی نے مزید کہا کہ تحقیقات جاری ہیں،جمعرات کو اجلاس کے بعد فوری عوام کو بتایا جائے گا، جمعہ کو ہی ماہرین کسی نتیجے پر پہنچ سکیں گے۔

اس کے علاوہ عالمی ادارہ صحت نے بھی دنیا سے ویکسی نیشن جاری رکھنے کی اپیل کی ہے۔ عالمی ادارہ صحت نے کہا ہے کہ آکسفورڈ کی بنائی گئی کورونا ویکسین آسٹرازینکا کے استعمال کو نہ روکا جائے۔

ڈبلیو ایچ او کے عہدیدار کا کہنا ہے کہ ویکسین کے استعمال سے خون میں گلٹیاں بننے کا کوئی ثبوت نہیں ہے لہٰذا ویکسین کا استعمال جاری رکھنا چاہئے۔

واضح رہے کہ تیرہ یورپی ممالک نے غیر محفوظ قرار دے کر ویکسین کا استعمال روک دیا تھا، ناروے میں آسٹرا زینیکا کےاستعمال پر خون کی پھٹکیاں بننے کے واقعات کے بعد آئرلینڈ نے ویکسین کا استعمال روک دیا تھا، اس کے علاوہ ڈنمارک، آئس لینڈ اور اٹلی، بلغاریہ ، تھائی لینڈ بھی ویکسین کا استعمال عارضی طور پر روک چکے ہیں۔

دوسری جانب برطانیہ ویکیسن کو محفوظ اور مؤثر قرار دے چکا ہے، آسٹرازینیکا کے ایک ترجمان نے کہا کہ کلینیکل ٹرائلز اور محفوظ ہونے کے ڈیٹا میں اس طرح کے اثر کا کوئی عندیہ سامنے نہیں آیا تھا۔

آسٹرازینیکا ویکسین استعمال کرنے والے آسٹریلیا اور کینیڈا سمیت کئی ممالک نے کسی بھی قسم کے ری ایکشن کی تردید کرتے ہوئے ویکسین کے نتائج کو بہترین قرار دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں