The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے طیارے کی فروخت میں ملوث سابق سی ای او واپس پاکستان نہیں آئے

کراچی : جرمنی کے ائیر پورٹ پر موجود پی آئی اے کا ایئر بس 310 ساختہ طیارہ فروخت کرنے کے ذمہ دار سابق سی ای او  پاکستان واپس نہ آئے، سابق جرمن سی او او ہلڈن برنڈ ایف آئی اے کو مطلوب ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پی آئی اے کے سابق سربراہ جرمن نژاد ہلڈن برینڈ کی منظوری سے پی آئی اے کا ایئر بس 310 ساختہ طیارہ تین سال قبل ایک فلم ساز کمپنی کے لیے بیرون ملک لے جایا گیا تھا جہاں ہالی ووڈ کی ایک متنازعہ فلم کی شوٹنگ میں استعمال کیے جانے کے بعد وہ طیارہ کئی ماہ تک جرمنی کے لزپک ایئر پورٹ پر کھڑا رہا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بعد ازاں پارکنگ چارجز کی مد میں انجن اور متعلقہ سامان 13 لاکھ 70 ہزار ڈالرز میں ایک غیر ملکی کمپنی کو فروخت کیا گیا۔

 پیپلزپارٹی کے سینیٹر سلیم مانڈوی والا نے2016میں سینیٹ اجلاس میں مؤقف اختیار کیا تھا کہ پی آئی اے کے قائم مقام سی ای او نے حکومت کی اجازت کے بغیر ایک طیارہ جرمنی کو اونے پونے داموں فروخت کردیا ہے، ان کیخلاف سخت کارروائی کی جائے۔

مزید پڑھیں : کئی ماہ سے جرمنی کے ایئرپورٹ پر کھڑا پی آئی اے کا طیارہ فروخت

واضح رہے کہ طیارے کے حوالے سے ایف آئی اے میں 2016سے انکوائری تکمیل کی منتظر ہے، پی آئی اے کے سابق جرمن سی ای او ہلڈن برنڈ چھ مئی2017 کو پاکستان سے چلے گئے تھے، ایف آئی اے کو تحقیقات میں مطلوب ہلڈن برنڈ کو ایک ماہ بعد پاکستان واپس آنا تھا۔

ہلڈن برنڈ کےعلاوہ جرمن کنسلٹنٹ کو بھی ایف آئی اے نے طلب کر رکھا ہے لیکن پی آئی اے کا طیارہ اے310روانہ کرنے کے ذمہ دار تاحال پاکستان واپس نہ آئے، شروڈکر نامی جرمن کنسلٹنٹ بھی کسی کو اطلاع دئیے بغیر اپنے وطن روانہ ہوگئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں