The news is by your side.

Advertisement

پاکستانی سائنسدان کا پاسپورٹ پھاڑنے والا ایف آئی اے اہلکارمعطل

ملتان : پاکستانی سائنسدان کا پاسپورٹ پھاڑنے پر ایف آئی اے اہلکار کو معطل کردیا گیا جبکہ اے ایس آئی محمد ابو بکر کے ملتان ائیر پورٹ داخلے پربھی پا بندی  عائد کر دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق ایف آئی اے اہلکار کی جانب سے پاکستانی سائنسدان کے کھانسنے پر پاسپورٹ پھاڑنے کے معاملے پر ڈائریکٹرایف آئی اے پنجاب زون ٹو نے نوٹس لے لیا۔

ڈائریکٹرایف آئی اے پنجاب زون ٹو نے ملتان ائیرپورٹ پر تعینات اے ایس آئی محمدابوبکرکومعطل کرتے ہوئے ملتان ائیر پورٹ پر داخلے پرپابندی بھی عائد کر دی ، جس کے بعد ایف آئی اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹرنے معطلی کے احکامات جا ری کر دئیے۔

اس سے قبل ایف آئی اے عملے کی جانب سے پاکستانی سائنس دان کے کھانسنے پر پاسپورٹ پھاڑنے کے معاملے کا سی اے اے نے نوٹس لیا تھا اور ایف آئی اے نے تحقیقات بھی شروع کر دی جبکہ تفصیلات اور فوٹیج طلب کر لی۔

مزید پڑھیں : سی اے اے نے پاکستانی سائنس دان کا پاسپورٹ پھاڑے جانے کا نوٹس لے لیا

یاد رہے یہ واقعہ 19 دسمبر کو ملتان ائیرپورٹ پر پیش آیا تھا، ڈاکٹر فیصل اپنی فیملی کے ہم راہ عمرے سے واپس پاکستان پہنچے تھے، جہاں نوجوان سائنس دان کی کھانسی کو ایف آئی اے عملے نے اپنی شان میں گستاخی سمجھا، اور تلخ کلامی پر امیگریشن عملے نے ان کے پاسپورٹ سے ویزے والا صفحہ پھاڑ کر پاسپورٹ منہ پر مارا جس سے ان کی آنکھ کے اوپر نشان بھی بنا۔

ڈاکٹر فیصل کا مؤقف تھا کہ کھانستے وقت منہ پر ہاتھ نہ رکھنا عملے کو اتنا ناگوار گزرا کہ ان کے ساتھ تضحیک آمیز رویہ اختیار کیا گیا، وہ بخار کی حالت میں تھے اس لیے کھانسی آئی تومنہ پر ہاتھ نہ رکھ سکے تھے۔

بعد ازاں ڈاکٹر فیصل نے ایئر پورٹ پر پیش آنے والے واقعے کو سوشل میڈیا پر وائرل کر دیا، وہ حال ہی میں جرمنی سے پی ایچ ڈی مکمل کر کے وطن لوٹے تھے، فیملی کے ہم راہ عمرہ بھی ادا کیا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں