The news is by your side.

Advertisement

فیس بک کے جعلی اکاؤنٹس پاکستان میں عام انتخابات پراثر انداز ہو سکتے ہیں، مارک زکر برگ

واشنگٹن : فیس بک کےمالک مارک زکر برگ نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ نے فیس بک کے جعلی اکاؤنٹ رکھنے والے اس سال پاکستان میں ہونے والےعام انتخابات پراثر انداز ہو سکتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق فیس بک کے سربراہ کو امریکی کانگریس میں پیشی پر ڈیٹا کے غیرمحفوظ ہونے پر سخت سوالات سامنا کرنا پڑا ، اس موقع پر پاکستان میں الیکشن کا تذکرہ بھی ہوا۔

مارک زکربرگ نے کانگریس میں کہا کہ جعلی اکاؤنٹس کے ذریعے پاکستان کے انتخابات پراثرانداز ہونے کی کوشش کی جاسکتی ہے، پوری کوشش ہے کہ پاکستان میں الیکشن پر فیس بک کے ذریعے کوئی اثراندازنہ ہو۔

بانی فیس بک کا کہنا تھا کہ رواں سال کئی ممالک میں انتخابات کاانعقاد ہورہاہے، کوشش ہے پاکستان سمیت دیگرملکوں میں ہونے والے انتخابات کی ساکھ متاثرنہ ہو، جعلی اکاؤنٹس کے ذریعے رائے عامہ پر اثرانداز ہونے کی ہرکوشش ناکام بنانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، روس میں بیٹھے کچھ افراد ہمارے سسٹم کا غلط استعمال کر رہے ہیں۔


مزید پڑھیں : فیس بک کے غلط استعمال سے روس امریکی نظام کو نقصان پہنچانا چاہتا ہے: مارک زکربرگ


فیس بک کےمالک مارک زکر برگ نے امریکی کانگریس کو بتایا کہ فیس بک جعلی اکائونٹس پر نظر رکھے ہوئے ہے اور ایسے اکائونٹس بند کئے جا رہے ہیں، جن سے ماضی مین قبل انتخابی عمل میں ووٹ پراثرانداز ہونے کی کوشش کی جاتی رہی ہے۔

مارک زکربرگ نے صارفین کے ڈیٹا کے تحفظ میں ناکامی پرمعافی بھی مانگی اور اعتراف کیا کہ سماجی ویب سائٹ نے اپنے اکاؤنٹ ہولڈرز کے کوائف کا غلط استعمال روکنے کیلئے خاطر خواہ اقدامات نہیں کئے تھے، جس کی وہ پوری ذمہ داری قبول کرتےہیں ۔

انہوں نے تسلیم کیا ٹولزکےغیرقانونی استعمال روکنے میں کوتاہی ہوئی جس سے جعلی خبریں پھیلیں۔

خیال رہے کہ فیس بک کےبانی امریکی کانگریس کی مختلف کمیٹیوں کے سامنےپیش ہوں گے۔

اس سے قبل امریکی سینیٹر جون کینیڈی نے مارک زکر برگ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ فیس کے بانی ڈیٹا چوری کے حوالے سے سچ بولیں ورنہ ہم سچ تک خود پہنچنا جانتے ہیں۔

یاد رہے کہ صارفین کے ڈیٹا کے غلط استعمال پر بانی فیس بک نے غلطی تسلیم کرتے ہوئے کہا تھا اس صورتحال سے صارفین کے اعتماد کو ٹھیس پہنچی، اگر ہم عوام کے ڈیٹا کی حفاظت نہیں کر سکتے تو کام چھوڑ دینا چاہیے۔


مزید پڑھیں : صارفین کے ڈیٹا کاغلط استعمال، فیس بک کے بانی نے غلطی تسلیم کرلی


بعد ازاں فیس بک نے فیصلہ کیا کہ وہ ڈیٹا چوری کے حوالے سے صارفین سے رابطہ کرکے اس بارے میں آگاہ کریں گے، کمپنی کے مطابق متاثرہ صارفین کو ان کی نیوز فیڈ پر تفصیلی پیغام کے ذریعے آگاہ کیا جائے گا، ان صارفین میں سے اکثریت ان کی ہے جنہوں نے اپنی معلومات ڈیٹا انالیٹیکس فرم کے ساتھ شیئر کی تھیں، ان میں سے 70 ملین افراد کا تعلق امریکا سے بتایا جاتا ہے۔

تمام فیس بک صارفین کو بھی پروٹیکٹنگ انفارمیشن کا ایک ایپلی کیشن کے ساتھ نوٹس دیا جائے گا، ایپلی کیشن کے ذریعے یہ معلوم کیا جائے گا کون سی معلومات آپ نے شیئر کی ہیں، یہ اقدام کیمبرج انالیٹیکا کمپنی پر عائد الزام کے باعث کیا گیا ہے۔

خیال رہے سیاسی مشاورتی کمپنی کی جانب سے امریکی صدارتی انتخاب میں فیس بک کے کروڑوں صارفین کا ڈیٹا بغیراجازت استعمال ہونے کے انکشاف کے بعد فیس بک کوشدیدتنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

واضح رہے انالیٹیکا کمپنی پر الزام ہے کہ انہوں نے لاکھوں امریکی شہری کی معلومات کو ایک سافٹ ویئر پروگرام کے تحت امریکی صدارتی الیکشن میں ووٹرز پر اپنا اثر و رسوخ ڈالنے کی کوشش کی تھی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں