The news is by your side.

Advertisement

ایم کیوایم کی ماؤں بہنوں پر تشدد ہوا تو بلاول اور بختاور خاموش رہے، فیصل سبزواری

کراچی : متحدہ قومی موومنٹ کے مرکزی رہنما فیصل سبزواری نے کہا ہے کہ ایم کیوایم کی ماؤں بہنوں پر تشدد ہواتو بلاول اور بختاور خاموش رہتے ہیں۔

کلفٹن میں تین تلوار کے مقام پر ہونے والے مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کالا بلدیاتی قانون اس صوبے میں موجود ہے، مائیں بہنیں 3دن پہلے پرامن طریقے سے سڑکوں پر نکلیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس دن بھی سڑک ہم نے نہیں جعلی اور متعصب پولیس نے بند کی تھی اور آج بھی ہم نے سڑک بند نہیں کی، خواتین آنسو گیس، لاٹھی چارج اور تعصب کے سامنے ڈٹی رہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ کی متعصب پولیس نےگاڑیوں پر بھی ڈنڈے مار کر ان کے شیشے توڑے، شرم آنی چاہیے پیپلز پارٹی کو کہ بلاول زرداری انسانی حقوق کمیٹی کے چیئرمین ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں ایک پتہ بھی گرے تو بلاول کا ٹوئٹ آجاتا ہے لیکن جب پولیس خواتین پر ظلم کررہی  تھی تو تم اورانسانی حقوق کی کمیٹی خاموش تھی جو کچھ ہوا وہ بلاول کی پالیسی کے تحت ہوا۔

فیصل سبزواری کا کہنا تھا کہ ہم بلدیاتی کالے بل پر آواز اٹھا رہے ہیں تو ان کو آگ لگتی ہے، ارے تمھارا بل بھی کالا اور جلنے والے کا منہ بھی کالا ، ہم اپنی آواز بلند اور احتجاج کرتے رہیں گے۔

متحدہ رہنما نے پیپلز پارٹی رہنماؤں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ تمھاری پولیس اور حکومت دونوں متعصب اور غیر مقامی ہیں، اگر ہمیں امن عزیز نہ ہوتا تو کسی مائی کے لعل میں دم نہیں تھا جو احتجاجی خواتین کو ہاتھ لگاتا۔

انہوں نے کہا کہ اگر ہم اٹھ گئے تو تم بنا چھ چھ موبائلوں کے شہر میں گھوم نہیں سکو گے، حکومت سندھ یا کسی مائی کے لعل میں دم ہے تو آج کےمظاہرے پولیس بھیج کر دیکھو، ایک مظاہرے کی تاب نہ لاکر سندھ حکومت رات میں مظاہرے کررہی ہے۔

فیصل سبزواری نے کہا کہ راتوں رات مئیر لانے کی سازش کررہے ہو، بتا رہا ہوں مئیر تو تمھارے کسی اچھےخان کا بھی نہیں آئے گاایک بار عام اور بلدیاتی انتخابات ہونے دو تمہیں پتہ چل جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ تم نے جو تعصب اور لسانیت کی فصل بوئی ہے اس کا ہم بیلٹ سے جواب دیں گے، متعصب اندھے قلم کاروں کوپتہ نہیں آنسو گیس انسان سے کرتی کیا ہے، کبھی آنسو گیس کی شیلنگ سہی تو آٹے دال کا بھاؤ پتہ چل جائے گا۔

ایم کیو ایم رہنما نے کہا کہ غیر مقامی پولیس نے اتنی شیلنگ کی کہ اسلم بھائی کی حالت غیر ہوئی اور انہیں دل کا دورہ پڑا، ڈاکٹروں نے تصدیق کی کہ ان کی موت دل کا دورہ پڑنے سے ہوئی ہے۔

فیصل سبزواری نے بتایا کہ میرے چچا اسلم سبزواری کو بھی ان کے دور میں گرفتار کرکے شدید تشدد کیا گیا، مراد علی شاہ کے باپ کے دور میں میرے چچا کی آنکھ میں ڈرل کی گئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ پھر یہ بے غیرت، بے شرم اور بے حس لوگ کہتے ہیں کہ وہ تشدد سے نہیں مرے، کہیں کچھ ہوجائے تو بلاول کی بہن بختاور نوٹس لیتی ہیں، ایم کیوایم کی ماؤں بہنوں پر تشدد ہو توبلاول اور بختاور خاموش ہوتی ہیں۔

فیصل سبزواری کا مزید کہنا تھا کہ جو کچھ ہوا بلاول زرداری اور پولیس کی ملی بھگت سے ہوا، اگر کسی میں دم ہے توچھ چھ موبائل کے پروٹوکول کے بغیر کراچی میں گھوم کر دکھائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں