The news is by your side.

Advertisement

‘زیادتی کے مجرمان انسان نہیں جانور ہیں، انھیں نامرد بنانے کا بل اسمبلی سے منظورکراکر دکھاؤں گا’

اسلام آباد : وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا کا کہنا ہے کہ زیادتی کے مجرمان انسان نہیں جانور ہیں، انہیں نامرد بنانے کا بل اسمبلی سے منظور کراکر دکھاؤں گا، مجرموں کو سزائیں دیں گےتو ہی ڈر پیدا ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ مروہ کیساتھ جو واقعہ پیش آیا وہ بہت تکلیف دہ ہے، مروا کے والد اور داداکہہ رہے ہیں ہماری بیٹی چلی گئی باقی کو بچالیں۔

فیصل واوڈ کا کہنا تھا کہ 17 لوگوں کاڈی این اےٹیسٹ لیا گیا ،ایک آدمی کو پکڑا گیا ہے، جولوگ خواتین سےزیادتیاں کررہےہیں وہ انسان نہیں جانورہیں، بچی کو جس طرح مارا گیا ایسے تو جانور کو بھی نہیں ماراجاتا۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ ایسے مجرموں کو نامرد بنانے کی سزا کے قانون کو اسمبلی سے منظورکراکر دکھاؤں گا، میں نے ایسے مجرموں کیلئے سرعام پھانسی کی بات اٹھائی ہے، قانون بننے کے بعد عدالت میں 2ہفتے میں فیصلہ ہوناچاہیے ، مجرم کو اپیل کیلئے بھی صرف2ہفتے ملنے چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایسا قانون بنانا ہے کہ کیس کا فیصلہ ایک ماہ کے اندر ہی ہو، رات اوردن دیہاڑےایسے گھناؤنے واقعات پیش آرہے ہیں، میری وزیراعظم سے اس حوالے پرتفصیل سےبات ہوئی ہے۔

فیصل واوڈ نے کہا کلہ جوان بچی کو بلیک میل کرکے اسے خودکشی پر مجبور کیا جاتا ہے، مروامیری ، بلاول بھٹو،شاہدخاقان کی بھی بیٹی کی طرح ہے، ایسے لوگوں کوشرم آنی چاہئےجوایسےوقت پربھی کردارکشی کی بات کرتےہیں۔

وفاقی وزیر آبی وسائل کا کہنا تھا کہ تمام سیاسی ومذہبی جماعتوں سےبھی کہتاہوں خداراکھڑےہوں، خواتین ہماری مائیں ہیں ،ہم توان کے پیروں تلےجنت مانگتےہیں، ہمارامذہب کسی پرالزام تراشی کی اجازت نہیں دیتا، مجرموں کو سخت سزائیں دیں گے تو ہی ڈر پیدا ہوگا۔

فیصل واوڈ کا کہنا تھا کہ اس جہالت پرمجرموں کو کڑی سےکڑی سزاملنی چاہئے، پھانسی سےپہلےجوتیزی سےقانونی بل پاس کرانا ہے وہ نامرد کا بل ہے، نامرد بل کے بعد کوشش ہوگی کہ سرعام پھانسی کابل پاس کرائیں۔

انھوں نے کہا کہ غلام نبی میمن ایماندارافسرہیں انہوں نےکہامروامیری بیٹی ہے، 35 سال میں کراچی میں بدقسمتی سے ڈی این اےلیب بھی نہ بن سکی، وکیلوں سے بات ہوئی ہے ،یہ بل لے کر اسمبلی جارہاہوں، گھناؤنے جرم کے خلاف ہمیں اس مشن کو جاری رکھنا ہے، اس بل پرکام شروع کرچکا ہوں۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ قوم کی ماں بہن بیٹیوں کی عزت سنبھالنےکیلئے پیر پڑنا پڑا تو بھی پڑجاؤں گا، اب ایسانہ ہوکہ2دن بعدسب بھول جائیں،ہمیں یہ قانون بناناہے، میری عدالتوں سےبھی اپیل ہےوہ اس کیس میں ہماری مدد کریں۔

فیصل واوڈ نے مزید کہا کہ مروااوراس جیسی تمام بچیاں ہماری بیٹیاں ہیں، ثبوت نہ ملنے پر لوگ بری ہوجاتے ہیں اس پربھی نظریں رکھناہوگی، سیاست کو ایک طرف رکھ کرسب ایک ہوکراس حوالےسےکام کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ سی سی پی او نے جس وقت یہ بات کی وہ مناسب نہیں تھا، مجرموں کو 48گھنٹے میں پکڑلیں تو شاید سی سی پی او کےبیان کا ازالہ ہو جائے، سی سی پی او لاہور کا کہنا ہے کہ میری بات کا مقصد یہ نہیں تھا، انھوں نے اس بات پر معافی مانگی ہے آئندہ احتیاط کریں۔

وفاقی وزیر آبی وسائل نے کہا کہ ہم بے شرم سیاستدان سیکھ لیں جو پیسے بٹورنے میں لگے ہوتےہیں ، 10 سال کے اندر کے بچے معصوم پھول کی طرح ہوتے ہیں، سب سے گزارش ہوگی کہ بچوں کو باہر چیز لینے بھی نہ بھیجیں، 10 سال سےاوپرکےبچوں کیلئےنہیں کہہ سکتےکہ وہ چلنا پھرنا چھوڑ دیں۔

فیصل واوڈ کا کہنا تھا کہ قانونی طورپرکسی مددکی ضرورت پڑےگی تومیں اپنی جیب سےکروں گا ، قانونی مدد کےلئے ےہم سب کو کھڑا ہونا پڑے گا، بڑے بڑے طوفان ہم نے پار کرلیے یہ اتنا بڑا طوفان نہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں