The news is by your side.

Advertisement

3 لاکھ 57 ہزار 500 روپے سے کتنے کام نمٹ جاتے؟

فیض احمد فیض اردو کے مقبول شعرا میں سے ایک ہیں جنھوں نے ترقی پسند نظریات اور اپنی انقلابی شاعری کی وجہ سے عالمی سطح پر بھی شہرت حاصل کی۔‌ آج فیض‌ صاحب کی برسی ہے۔ فیض 20 نومبر 1984 کو اس جہانِ فانی سے رخصت ہوگئے تھے۔ ایک زمانے میں‌ فیض صاحب نے لندن میں‌ خود ساختہ جلاوطنی بھی کاٹی جہاں‌ وہ معروف شاعرہ زہرہ نگاہ کے گھر ٹھہرے تھے۔

چند برس قبل ایک تقریب میں زہرہ نگاہ نے انہی دنوں‌ کی یادیں‌ تازہ کرتے ہوئے فیض سے متعلق چند دل چسپ واقعات بھی سنائے تھے جن میں‌ سے ایک یہ ہے۔

لندن میں‌ جلاوطنی کے زمانے میں‌ ان کے چاہنے والے ملاقات کے لیے آتے رہتے تھے۔ ان میں‌ شاعر و ادیب اور فیض‌ کے مدّاح بھی شامل تھے۔

ایک دن ایک صاحب آئے اور فیض‌ سے ملاقات کے دوران جب یہ دیکھا کہ وہ سگریٹ سے سگریٹ سلگا رہے ہیں‌ جو کہ ان کی عادت تھی۔ تب انھوں نے اپنی جیب سے ایک کیلکولیٹر نکالا اور فیض سے پوچھا، ’آپ دن میں کتنے سگریٹ پھونک جاتے ہیں؟‘ فیض نے بتا دیا۔

انھوں‌ نے اگلا سوال کیا کہ ’کب سے پی رہے ہیں؟‘ پھر وہ کیلکولیٹر پر حساب لگانے لگے اور بولے، ’صاحب آپ اب تک تین لاکھ 57 ہزار پانچ سو روپے کے سگریٹ پھونک چکے ہیں۔ ذرا سوچیے، اگر یہ پیسے آپ کے پاس ہوتے تو ان سے کتنے کام نمٹ سکتے تھے۔‘

فیض نے کہا، ’بھئی یہ تو اچھا ہی ہے کہ ہمارے پاس اتنے پیسے نہیں ہیں، ورنہ یہ سوچ سوچ کر کتنی کوفت ہوتی کہ آخر انھیں خرچ کہاں کریں؟‘

Comments

یہ بھی پڑھیں