site
stats
سندھ

سندھ حکومت کو 22 اگست والی ایم کیو ایم راس آتی ہے، فاروق ستار

کراچی : ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کو 22 اگست والی ایم کیو ایم راس آتی ہے۔

متحدہ قومی موومنٹ کے 33 ویں یوم تاسیس کے موقع پر منعقد کردہ جلسہ عام سے خطاب کر تے ہوئے ڈاکٹر فاروق ستار نے سندھ حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ایم کیو ایم تو نہیں لیکن سندھ حکومت ضرور 22 اگست کے ساتھ کھڑی ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پوری ایم کیو ایم نے لندن کی پالیسی سے لا تعلقی کا نہ صرف یہ کہ اظہار کیا بلکہ اس کا عملی ثبوت دیا لیکن لگتا ہے کہ حکومت سندھ کو ہماری یہ پالیسی پسند نہیں آئی کیوں کہ انہیں تو 22اگست والی ایم کیو ایم ہی راس آتی ہے۔

فاروق ستار نے کہا کہ پیپلز پارٹی متعصبانہ رویئے سے شہری اور دیہی علاقوں میں تفریق کا باعث بن رہی ہے یہی وجہ ہے کہ اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار کو وزیراعلیٰ سے ملنے کے لئے وقت نہیں دیا جا رہا ہے جب کہ قائد حزب اختلاف نے تین مہینےسے وقت مانگ رکھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ دھونس دھمکی یا جیلوں میں پابند سلاسل کرنے سے پامرے عزائم کو کچلا نہیں جا سکتا اور ہم شہر کراچی کے حق سے دستبردار نہیں ہوں گے، میگا سٹی کے شہریوں کو ان کا حق دلوا کر رہیں گے۔

ڈاکتر فاروق ستار نے کہا کہ ہماری تمام تر نیک خواہشات کے با وجود سیاست کرنے کا موقع نہیں دیا جا رہا ہے بلکہ بات مائنس ون سے بھی آگے جا رہی ہے اور ہم پر اعتبار نہیں کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بلدیاتی اداروں کو اختیارات نہ دے کر پوری شہری آبادی کو حق نمائندگی سے محروم کیا جا رہا ہے جب کہ اختیارات پر قابض حکومتِ سندھ شہری سندھ کے مسائل حل کرنے میں سنجیدہ نظر نہیں آتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top