The news is by your side.

Advertisement

جعلی اکاؤنٹس کیس: فریال تالپور کے جسمانی ریمانڈ میں 8 جولائی تک توسیع

اسلام آباد : احتساب عدالت نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں سابق صدر آصف زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور کے جسمانی ریمانڈ میں 8 جولائی تک توسیع کردی۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں جعلی اکاؤنٹس کیس کی سماعت ہوئی ، پیپلز پارٹی کی رہنما فریال تالپور کو پیش کیا گیا، سماعت میں وکیل لطیف کھوسہ نے کہا شفافیت کرتےہیں توحلیمہ بی بی کوتو نوٹس جاری نہیں کرتے، ہمیں کوئی ہمدردی نہیں چاہیےاورنہ کوئی توقع ہے۔

فریال تالپور نے بیان میں کہا شوگرکی مریضہ ،بلڈپریشربھی ہائی رہتاہے، جس پر جج احتساب عدالت نے فریال تالپور کی میڈیکل رپورٹ کاجائزہ کیا اور فریال تالپور کو ہدایت کی آپ نشست پربیٹھ جائیں۔

نیب نے کہا گنے کی سپلائی کےریکارڈپردستاویزات پرفریال کامؤقف لیناہے، جس پر فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا فریال تالپورکوجعلی اکاؤنٹس کیس میں گرفتارکیاگیا، زمینوں کاکیاتعلق؟ یہ چیزوں کامربع بنارہےہیں۔

تفتیشی افسر کا کہنا تھا سمجھنےکی کوشش کررہےہیں گنےکن شوگرملزکوبیچےگئے، فریال تالپورنےبتایاپیسےگنوں کی قیمت کی مدمیں آتےتھے، ہم اس بیان کی تصدیق کرنےکی کوشش کررہےہیں۔
.
نیب پراسیکیوٹر نے کہا ان کاکہناہےزرداری گروپ گنےکی سپلائی کرتاہے، گنےکی کاشت کیلئےجوزمینیں ہیں مالکان کےبیانات لینےہیں، بیانات پرفریال تالپورسےپوچھ گچھ کرنی ہے۔

جس پر وکیل فاروق ایچ نائیک نے کہا فریال تالپورکےزرداری گروپ میں ایک فیصدسےبھی کم شیئرزہیں، پارک لین میں بھی فریال تالپورکاکوئی کردارنہیں، پارک لین نےسمٹ بینک سےقرضہ لیا، نیب والے کھچڑی بنارہے ہیں صرف چوں چوں کامربع ہے۔

لطیف کھوسہ نے نیب پر طنز کرتے ہوئے کہا نیب ماشااللہ بہت شفاف کام کررہاہے، اللہ ان کومزیدشفاف کام کرنےکی ہدایت دے، علیمہ باجی سےمتعلق انہیں کچھ کیوں نظرنہیں آتا، انہوں نےبی بی شہیدکےساتھ بھی ایساہی سلوک کیا، گھڑلیں انہوں نےجوکچھ گھڑناہے۔

جج نے نیب سے استفسار کا 3 کروڑ کی رقم کا کیا ہوا جو آپ نے کہا تھا خورد برد ہوئی، جس پر نیب نے جواب دیا فریال تالپورسےاس پیسےکاپوچھاتوکہاشوگرمل سےآیا، ہم اس معاملےمیں تعلق کی تحقیقات کررہےہیں۔

احتساب عدالت نے فریال تالپورکا 14 روزہ جسمانی ریمانڈمنظور کرتے ہوئے جسمانی ریمانڈمیں8جولائی تک توسیع کردی۔

مزید پڑھیں : فریال تالپور9 روز کے جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

یاد رہے 10 جون کو جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق صدر آصف زرداری اور فریال تالپور کی درخواست ضمانت مسترد کردی تھی اور گرفتار کرنے کا حکم دیا تھا۔

بعد ازاں 14ا جون کو پاکستان پیپلزپارٹی کی رہنما فریال تالپور کو جعلی اکاؤنٹس کیس میں نیب نے گرفتار کیا تھا اور  ان کی رہائش گاہ کو سب جیل قرار دے دیا گیا تھا۔

اگلے روز فریال تالپور کو احتساب عدالت میں پیش کیا گیا ، جہاں نیب  نے تفتیش کے لیے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی تاہم  احتساب عدالت نے فریال تالپور کا 9 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے 24 جون کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں