پہلے فیصلوں کی طرح آج کے فیصلے کا احترام واجب سمجھتےہیں، وزیراطلاعات فواد چوہدری
The news is by your side.

Advertisement

پہلے فیصلوں کی طرح آج کے فیصلے کا احترام واجب سمجھتےہیں، وزیراطلاعات فواد چوہدری

اسلام آباد : وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستان میں عدالتیں آزاد ہیں، پہلے فیصلوں کی طرح آج کے فیصلے کا احترام واجب سمجھتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے شریف خاندان کی سزا معطلی پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہم عدالتوں کامکمل احترام کرتےہیں، پاکستان میں عدالتیں آزاد ہیں، پہلے فیصلوں کی طرح آج کے فیصلے کا احترام واجب سمجھتے ہیں‌۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ قومی احتساب بیوروایک آزاد اور خود مختارادارہ ہے، نیب اپنی سرگرمیاں خود کرتا ہے، حکومت کا کوئی کردارنہیں، حکومت اور عوام کرپشن میں ملوث افراد کیخلاف کارروائی چاہتے ہیں۔

وزیراطلاعات نے کہا کہ قوم چاہتی ہےان کی لوٹی گئی دولت واپس لائی جانی چاہیے، لوٹی دولت کی واپسی اور حکومت بنیادی ہدف کا حصول یقینی بنائے گی۔

ان کا مزید کہنا تھا شریف خاندان کےکردارپرقوم کی نظروں میں ابہام باقی نہیں، شریف خاندان ثابت نہیں کرسکا اربوں روپے کہاں سے آئے، معاملہ آگے بڑھے گا اور قانون یقیناً اپنا راستہ لے گا۔

اس سے قبل پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید کا کہنا تھا کہ نوازشریف، مریم نواز، محمد صفدر اب بھی مجرم ہیں، سزائیں ابھی معطل ہوئی ہیں منسوخ نہیں، ان کی منزل اڈیالہ ہی ہے۔

یاد رہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے نوازشریف،مریم نوازاور صفدرکی سزا معطلی کی درخواستیں منظور کرتے ہوئے تینوں کو رہا کرنے کا حکم دیا جبکہ عدالت نے تینوں کو پانچ پانچ لاکھ کے مچلکے جمع کرانے کی ہدایت بھی کی۔

مزید پڑھیں : ایوان فیلڈ ریفرنس ، نوازشریف، مریم نواز، کپیٹن(ر)صفدر کی سزا معطل ، رہا کرنے کا حکم

خیال رہے لندن فلیٹس سے متعلق ایوان فیلڈ ریفرنس میں اسلام آباد کی احتساب عدالت نے چھ جولائی کو فیصلہ سناتے ہوئے نوازشریف کو گیارہ سال، مریم نوازکو سات سال اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو دو سال قید کی سزا سنائی تھی۔

نواز شریف اور مریم نواز 13 جولائی کو لندن سے پاکستان آئے تو انھیں گرفتار کرلیا گیا تھا، جس کے بعد تینوں مجرمان نے سزاؤں کے خلاف سولہ جولائی کو اسلام آباد ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں