The news is by your side.

Advertisement

سوشل میڈیا پر فواد چوہدری اور شبر زیدی آمنے سامنے

اسلام آباد: سابق چئیرمین ایف بی آر شبر زیدی اور وفاقی وزیر فواد چوہدری سوشل میڈیا پر آمنے سامنے آگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سابق چئیرمین ایف بی آر شبر زیدی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں کہا کہ سیاست کی موجودہ شکل خوفناک حد تک خراب ہے، 1973 کا آئین موثر نہیں، پاکستان کو ایک نیا عمرانی معاہدہ کرنا ہوگا۔

شبرزیدی نے لکھا کہ میرے آباؤ اجداد نے پاکستان بنایا اور میں نے چالیس سال اس ملک کی خدمت کی، اپنے شعبے میں سب سے زیادہ ٹیکس دیا، میرا فرض ہے کہ اس ملک کے غریب عوام کے لئے کچھ کیا جائے۔

اپنے ٹوئٹ میں سابق چیئرمین ایف بی آر نے لکھا کہ پاکستان ایک ریاست ہے اور اسکے آئین کو وقت کے ساتھ تبدیل ہونا چاہئے، یہ برائی نہیں اچھائی ہے، ہم سب آج کے حالات سے مطمئن نہیں ہے، سب سے پہلے معاشی حالات کو سدھارنا ہے۔

شبر زیدی نے کہا کہ میری ساری زندگی ڈاکیومینٹیشن اور ڈسٹری بیوٹنل ایکویٹی کو بچانے میں گزری، اب ایف بی آر سے باہر مشن مکمل کرنا ہے۔

شبر زیدی کی جانب سے کئے گئے ٹوئٹ پر وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری میدان میں آئے اور ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ معذرت کے ساتھ آپ وہ کام بھی نہیں کر سکے جو آپ کو آتا تھا، آئین اور عمرانی معاہدے کا آپ کو الف ب بھی نہیں پتہ۔

فواد چوہدری نے لکھا کہ ایسی ڈرامہ تجاویز دینے سے بہتر ہے ٹیکس کے نظام پر کام کریں جو آپ کو آتا ہے۔

یاد رہے کہ گذشتہ سال جولائی میں وفاقی حکومت نے شبر زیدی کو فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے چیئرمین کے عہدے سے ہٹاتے ہوئے نوشین جاوید امجد کو نیا چیئرپرسن تعینات کیا تھا۔

جنوری دوہزار بیس میں طبعیت ناساز ہونے پر شبر زیدی غیرمعینہ مدت کے لیے چھٹیوں پر چلے گئے تھے جس کے بعد نوشین جاوید امجد قائم مقام چیئرپرسن کے طور پر فرائض انجام دے رہی تھیں۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں