تازہ ترین

ملک میں‌ رمضان المبارک کا چاند نظر آگیا، آج پہلا روزہ ہوگا

پاکستان میں رمضان المبارک 1444 ہجری کا چاند نظر...

الیکشن کمیشن نے پنجاب کے انتخابات ملتوی کردیے

اسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے...

’یہ مجھے مرتضیٰ بھٹو کی طرح قتل کرنا چاہتے ہیں‘

لاہور: سابق وزیر اعظم اور چیئرمین پاکستان تحریک انصاف...

صدرِ مملکت کا قیدیوں کی سزاؤں میں خصوصی چھوٹ کا اعلان

اسلام آباد: صدر مملکت عارف علوی نے یوم پاکستان...

آئین سب پر مقدم، کوئی اس سے بالاتر نہیں ہے، وزیراعظم

تھرپارکر: وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ...

ثاقب نثار، فیض حمید عمران خان کیلئے لابنگ کررہے ہیں، فضل الرحمان

لاہور : حکومتی اتحاد پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے ملک میں عام انتخابات کے انعقاد کو مشکل قرار دیتے ہوئے عدلیہ کی جانب سے سوموٹو لینے کے عمل اور عمران خان کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے، انہوں نے ثاقب نثار اور فیض حمیدپر عمران خان کیلئے لابنگ کا بھی الزام عائد کیا۔

لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ عدالتوں کا احترام کیا ہے، ہم آئین اور ریاست کے ساتھ ہمیشہ سے کھڑے ہیں، ہم مقررہ وقت میں انتخابات کے انعقاد پر یقین رکھتے ہیں لیکن ریاست کو درپیش صورتحال کو بھی دیکھنا ہے اور حقائق پر آنکھیں بند نہیں کرنی۔

انہوں نے انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے کہا کہ یہاں اسمبلیاں توڑی گئیں، دو اسمبلیاں اس وقت موجود نہیں، ملک میں مردم شماری بھی جاری ہے، ہم سمجھتے ہیں انتخابات مردم شماری کے بعد ہوں، ہم نے ملک کے حالات کو مدنظر رکھ کر فیصلہ کرنا ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ پورے ریجن میں پاکستان کو نشانہ کیوں بنایا جا رہا ہے یہ جانتے ہیں، ملک میں مسلح گروپ موجود ہیں، تھانوں پر حملے ہورہے ہیں، میں اور میرے جیسے بہت سے لوگ ان علاقوں میں انتخابات میں نہیں جاسکتے، ریاست کو درپیش صورتحال کے ہر حوالے سے دیکھنا ہے۔

سربراہ پی ڈی ایم کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نے ازخود نوٹس لیا کہ الیکشن شیڈول کیوں نہیں دیا جارہا، اسی سپریم کورٹ نے پرویز مشرف کو 3سال میں الیکشن کرانے کا کہا یہ کس آئین کا تقاضا تھا، ہمیں ضرور اس بات پر تعجب اور حیرت ہے۔

انہوں کہا کہ کیا دونوں اسمبلیاں وزرائے اعلیٰ نے خود توڑیں یا ایک شخص کے حکم پر توڑی گئیں، کیا ہم پاکستان کی سیاست ایسے کریں گے؟ ہمیں اس بات پرتعجب ہے کہ عدالت عظمیٰ نے انتخابی صورتحال پر ازخود نوٹس لیا۔ عدلیہ ازخود نوٹس لے کر بس فارغ ہوگئی، ہمارے نزدیک یہ تین دو کا نہیں بلکہ چار ایک کا فیصلہ ہے۔

مولانافضل الرحمٰن نے کہا کہ 25جولائی کے انتخابات پر عوام عدالتوں کے سامنے تھی ملین مارچ کئے گئے تھے، کیا اس وقت عوام کی چیخ و پکار آپ کو سنائی نہیں دی۔ ایک دو لوگ آپ کے دروازے پر آتے ہیں تو آپ سو موٹو لے لیتے ہیں۔

اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ہمارے علم میں یہ بات آئی ہے کہ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار، فیض حمید عمران خان کیلئے لابنگ کررہے ہیں، ادارے فوری طور پر اس بات کا نوٹس لیں اور انہیں لگام دیں۔ تاریخ میں پہلی باراداروں میں نظریاتی تقسیم دیکھی جارہی ہے، یہ اسی وقت ہوتی ہے جب باہر سے ڈوریں ہلائی جارہی ہوں۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ گزشتہ 3سالہ پالیسیوں کی وجہ سے ہم دھنستے جارہے ہیں جو ملک ہماری مدد کرنے لگتا ہے، عمران خان اس کی راہ میں رکاوٹ بن جاتا ہے، ہم ان کے ارادوں کو جانتے ہیں مگر مثبت اقدامات کررہے ہیں۔

Comments