The news is by your side.

Advertisement

اب قافلہ رکے گا نہیں، مولانا فضل الرحمان کا اسلام آباد کی طرف مارچ کا اعلان

کراچی: جمعیت علما اسلام اور پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے  لانگ مارچ کا اشارہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ اب یہ قافلہ رکے گا نہیں بلکہ جاری رہے گا۔

کراچی میں پی ڈی ایم کے تحت ہونے والے جلسے ’استحکام پاکستان و حقوقِ سندھ‘ میں کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ اتحاد میں شامل جماعتوں کے قائدین نے ملک کے حالات اور سیاسی پہلوؤں سے آپ کو آگاہ کیا۔

فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ’آج دنیا آگے بڑھ رہی ہے لیکن پاکستان کو پیچھےکی طرف دھکیل دیاگیا، ایسی صورت حال پر ہم خاموش تماشائی نہیں رہ سکتے، پاکستان کے22کروڑ عوام کوممتاز مقام دلا کر ہی دم لیں گے۔

اُن کا کہنا تھاکہ ’کروناکی وجہ سے پی ڈی ایم کےجلسےنہیں ہوئےتوکہاگیایہ خاموش ہوگیا، آج کاجلسہ بتا رہا ہے پی ڈی ایم زندہ اور فعال ہے، موجودہ حکومت ناجائزہےاسےکوئی عوامی حمایت حاصل نہیں، جعلی حکومت جبرکےساتھ کرسی پربیٹھی ہے، قانون اورپارلیمنٹ کی بالادستی کے تحت ہم نےملک کو چلانا ہے‘۔

مزید پڑھیں: ‏’میٹرو بننے کا پہلا حق کراچی کا تھا‘‏

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ’آج پاکستان کی معیشت جمود کا شکار ہے، سالانہ ترقیاتی تخمینہ ساڑھے 5 فیصد قوم کودیا گیا، اگلےسال 6.5 فیصدکے تخمینہ کااعلان ہوا، نااہلی کی وجہ سےغریب انسان کیلئے جینا مشکل ہوگیا ہے، پہلے ایک گھرمیں 5لوگوں میں سے 3روزگار والے 2 بے روزگار ہوتے تھے، آج ایک گھرمیں 5میں 4بےروزگاراور صرف ایک کام  کرنے والاہے، لوگوں کیلئے راشن لینا مشکل ہوگیا ہے‘۔

سربراہ پی ڈی ایم نے کہا کہ ’پاکستان نااہلوں کیلئے نہیں بناتھا، لوگو! اٹھواورانقلاب لاؤ کیونکہ اب انقلاب کےسواکوئی راستہ نہیں ہے،قو م سےکہتاہوں مایوسی کی طرف نہیں جانا، ہم تھکےنہیں، آپ اپنےجذبوں کو بلند رکھیں‘۔

فضل الرحمان نے کہا کہ سی پیک عالمی قوتوں کوبرداشت نہیں ہوا، چین نےدنیاسےتجارت کیلئے پاکستان کے راستوں کو ترجیح دی،سی پیک دنیا کے دیگرممالک کو ہضم نہیں ہوا، عمران خان نے امریکا کے خلاف ایک جملہ بھی ادا نہیں کیا، وزیراعظم بن کر پاکستان کی معیشت کو زمین بوس کیا اور عالمی دنیا میں پاکستان کو تنہا کردیا‘۔

مولانا فضل الرحمان نے مزید کہا کہ ’اب پاکستان میں صرف جلسے نہیں روڈ کارواں بھی ہوں گے، اب اسلام آبادکی طرف مارچ بھی ہوگا، ہم ان نوجوانوں کو کنٹرول میں کب تک رکھیں، اب قافلہ چل پڑا ہے، جو تھمے گا اور رکے گا نہیں‘۔

پی ڈی ایم سربراہ نے افغانستان کی صورت حال پر امریکا کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’تم نے معاہدہ کیا، اب افغانستان میں نئی حکومت کے لیے شرائط عائد نہ کرو اور تسلیم کرو کہ افغانستان میں تمھیں شکست ہوئی ہے، یاد رکھو شکست خوردہ شرائط عائد نہیں کرسکتا‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں