site
stats
پاکستان

فضل الرحمان نے آرٹیکل 63،62 میں ترمیم کی مخالفت کردی

لاہور: مولانا فضل الرحمان نے آئین کے آرٹیکل 63،62 میں ترمیم کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بنیادی شقیں نکالنا آئین مسخ کرنے کے مترادف ہے۔

ذرائع کے مطابق نوازشریف سے ملاقات کے درمیان مولانا فضل الرحمان نے آئین کے آرٹیکل 63،62 میں ترمیم کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ بنیادی شقوں کو آئین سے نکالنا اسے مسخ کرنے کے مترادف ہے۔

نوازشریف اور فضل الرحمان کے درمیان ملاقات 2 گھنٹے جاری رہی جس میں موجودہ سیاسی صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا، سابق وزیراعظم نے جمعیت علماء اسلام کے سربراہ کو رابطہ مہم کے حوالے سے آگاہ کیا اور تمام سیاسی جماعتوں سے رابطوں کا ٹاسک دیا۔

ذرائع کے مطابق نوازشریف نے مولانا فضل الرحمان کو پیپلزپارٹی سے رابطے بحال کرنے کے ٹاسک دیا ہے۔

پڑھیں: وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا آرٹیکل 62،63 میں ترمیم کا عندیہ

یاد رہے کہ آئین کے آرٹیکل 63،62 میں ترمیم کی کاوشیں جاری ہیں جس کا عندیہ موجودہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی بھی دے چکےہیں، انہوں نے کہا تھا کہ آرٹیکل 63،62 میں ترمیم کے لیے تمام سیاسی جماعتوں سے رابطہ کیا جائے گا اور متفقہ طور پر اس کا حل نکال لیا جائے گا۔

مزید پڑھیں: سستے اور فوری انصاف کے لیے آئینی ترمیم لائیں گے: نواز شریف


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top