The news is by your side.

Advertisement

ایف بی آر کے کرپٹ ملازمین بھی قانون کے دائرے میں

اسلام آباد: فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے بلیک میلنگ اور کرپشن کے خاتمے کے لیے بڑا فیصلہ کرتے ہوئے غیر قانونی اور خلاف ضابطہ کام کرنے والے ملازمین کے خلاف کارروائی کرنے کا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق شہریوں کو قانون کا پاسداربنانے کے لیے کوشاں ادارے کے ملازمین کو بھی اب قانون کے دائرے میں لانے کا فیصلہ کرلیا گیا۔ ایف بی آر نے کرپٹ، غیر قانونی اور خلاف ضابطہ کام کرنے والے ملازمین کے خلاف بھی ایکشن کا فیصلہ کرلیا۔

ایف بی آر کے کرپٹ ملازمین کے خلاف شکایات درج کروانے کی سہولت متعارف کروادی گئی، شکایت پر عمل در آمد کرتے ہوئے کرپٹ ملازمین کے خلاف کارروائی ہوگی۔

ایف بی آر ملازمین کے خلاف 4 علیحدہ طریقوں سے شکایات درج کروائی جاسکتی ہے جس کے لیے کال، ای میل اور ویب سائٹ پر رابطہ کیا جاسکتا ہے۔

خیال رہے کہ ایف بی آر نے رواں مالی سال کے پہلے 8 ماہ میں 2 ہزار 566 ارب ٹیکس جمع کرنے کا ہدف مقرر کیا تھا، جولائی سے فروری تک 2 ہزار 330 ارب روپے کا ٹیکس اکٹھا کیا جاسکا۔

ایف بی آر کے مطابق بے نامی اکاؤنٹس یا رقم کی غیر قانونی منتقلی کے خلاف رواں ماہ کے آغاز سے آپریشن لاہور، کراچی اور اسلام آباد میں شروع کیا جا چکا ہے جس کے لیے اسٹیٹ بینک سے ڈیٹا حاصل کیا جارہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں