The news is by your side.

Advertisement

تین سال سے پہلے جائیداد کی فروخت پر ٹیکس لگے گا،اسحاق ڈار

اسلام آباد : پراپرٹی کی قیمتوں کے تعین کے لیے حکومت اور رئیل اسٹیٹ کے نمائندگوں کے درمیان مذاکرات کامیاب ہو گئے ہیں،باہمی رضامندی سے کیے گئے معاہدے کے تحت زمین کی قیمتوں کا تعین اید بی آر کرے گی۔

رئیل اسٹیٹ کی نمائندہ ےنظیموں سے کامیبا مزاکرات کے بعد وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ اتفاق رائےسےکیے گئے فیصلوں کے تحت اب زمینوں کی قیمتوں کا تعین ایف بی آر کرے گا، تین سال سے پہلے جائیداد فروخت کرنے پر ٹیکس لگے گا،ود ہولڈنگ ٹیکس بھی 30لاکھ کے بجائے 40لاکھ سے زائد مالیت کی جائیداد پر ہی لگے گا،3سال سے پہلے بیچنے پر 5فیصد ٹیکس ادا کرنا ہو گا،ایک سال میں بکنے والی پراپرٹی پراب 10فیصدٹیکس لاگوہوگا اور 2سال کاہاکنگ پیریڈ5سال تک بڑھادیاگیاہے۔

انہوں نے کہا کہ پراپرٹی ڈیلرز نے اپنے مسائل اور تجاویز حکومت کے سامنے پیش کیں جس کے بعد طویل مشاورت اور باہمی رضامندی کے بعد یہ فیصلے کیے گئے ہیں جن پرعمل درآمد کےلیےقانون سازی کریں گے اور اس معاملے کو قانونی شکل دینے کے لیے آرڈیننس لانے پربھی غورکریں گے۔

اس موقع پر وفاقی وزیر خزانہ نے مذاکرات میں شریک تمام افرادکاشکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اوورسیزپاکستانی بھی ملک میں پراپرٹی میں سرمایہ کاری کرتےہیں،بینک ٹرانزکشن ود ہولڈنگ ٹیکس اگست میں بھی 0اعشاریہ4 فیصد برقراررہے گا،پراپرٹی کی قیمتوں پرکسی کوبلیک میل ہونےکی ضرورت نہیں،اپنا کام مکمل کرنے کے بعد صوبوں سے بات کریں گے۔

بعد ازاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے صدرایف پی سی سی آئی عبدالرؤف عالم نے بھی وزیر خزانہ کا شکر ادا کیا اور رئیل اسٹیٹ انڈسٹری کی جانب سے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی،اُن کا کہنا تھا کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار نےہماری گزارشات غورسےسنیں اور ان پر عمل بھی کیا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں