The news is by your side.

Advertisement

یورپی یونین اور برطانیہ بریگزٹ معاہدے کیلئے ‘تعمیری’ مذاکرات میں تیزی لانے پر متفق

برسلز: برطانیہ اور یورپی یونین نے بریگزٹ معاہدے کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کو ‘تعمیری’ قرار دیتے ہوئے مذاکرات میں مزید تیزی لانے پر اتفاق کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق فرانسیسی صدر ایمانوئیل میکرون اور جرمنی چانسلر انجیلا مرکل کے درمیان شیڈول ملاقات کے بعد یورپین یونین میں شامل ریاستیں 14 اکتوبر سے بریگزیٹ معاہدے کیلئے مذاکرت میں پیش رفت کا جائزہ لیں گی۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق برسلز میں قائم یورپین یونین کے مرکز میں برطانوی بریگزٹ وزیر اسٹیفن بارکلے اور یورپی یونین کے مذاکرات کار مائیکل بارنیئر کے درمیان مذاکرات ہوئے۔

یورپی کمیشن نے مذاکرات کے بعد ایک بیان میں کہا کہ یورپی یونین اور برطانیہ آنے والے دنوں میں مذاکرت میں تیزی لانے پر متفق ہوچکے ہیں۔

بیان میں کہا گیا کہ کمیشن یورپین پارلیمنٹ اور رکن ریاستوں سے ایک مرتبہ پھر رائے لے گا تاکہ یورپی یونین کے سربراہی اجلاس کا ایجنڈے طے کرنے کی اجازت دی جائے۔

برطانوی وزیر اور یورپی یونین کے نمائندے کی ملاقات کو تعمیری قرار دیتے ہوئے حکام نے کہا کہ تمام رکن ریاستوں کے سفیروں کو ممکنہ ڈرافٹ کے لیے زیادہ سے زیادہ مذاکرات کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آنیوالے دنوں میں بریگزٹ معاہدے پر صورت حال واضح ہوسکتی ہے یا کم ازکم برطانیہ کی یونین سے علیحدگی کے التوا کی وجوہات بھی سامنے آجائیں گی۔

یورپی یونین کے ایک عہدیدار نے کہا کہ کمیشن طے کرے گا کہ ممکنہ طور پر راستہ کیا ہوگا کیونکہ یہ ایک اچھا موقع ہے، تاہم مذاکرات میں کیا طے پایا اس حوالے سے دونوں فریقین نے کچھ نہیں بتایا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں