The news is by your side.

Advertisement

افغان صدر کا بیان پاکستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت کے مترادف ہے: فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد: وزیر اعظم کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے افغان صدر اشرف غنی کو بین الاقوامی تعلقات کے اصول پیش نظر رکھنے کی تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا حالیہ ٹویٹ پاکستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت کے مترادف ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ٹویٹ میں کہا کہ افغان صدر اشرف غنی کی حالیہ ٹویٹ پاکستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت کے مترادف ہے۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ افغان قیادت کو ایسے بیانات سے پہلے بین الاقوامی تعلقات میں عدم مداخلت کے اصولوں کو پیش نظر رکھنا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان خطے میں امن و استحکام کا داعی ہے، ہم افغانستان میں قیام امن کے مشترکہ مقصد کے حصول کے لیے مل کر کام کرنے کے خواہاں ہیں۔

اپنے ٹویٹ میں معاون خصوصی کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان خود مختار ریاست ہے، آئین پاکستان سے منحرف عناصر کے ساتھ قانون کے مطابق کارروائی کرنا پاکستان کا قانون ہے۔

انہوں نے کہا کہ کسی اور ملک کا دوسرے ملک میں قانون کی بالا دستی کے خلاف بات کرنا سفارتی تقاضوں کے منافی ہے۔ پاکستان کی بہادر مسلح افواج اور غیور عوام نے اپنے لہو سے سے امن کے دیے روشن کیے ہیں۔ کسی شر پسند کو امن سے کھیلنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔

معاون خصوصی کا مزید کہنا تھا کہ شرپسندوں کے خلاف قانون اپنا راستہ خود بنائے گا۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز منظور پشتین کو ملک میں انتشار پھیلانے اور تخریب کاری کے الزام میں گرفتار کر کے عدالت پیش کیا گیا تھا جس پر افغان صدر نے تشویش کا اظہار کیا تھا۔

بعد ازاں دفتر خارجہ کی جانب سے افغان صدر کے ٹویٹ پر اظہار ناپسندیدگی کرتے ہوئے کہا گیا کہ افغان صدر کا بیان پاکستان کے اندرونی معاملات میں واضح مداخلت ہے، ایسے بیان دونوں ملکوں میں دوستانہ تعلقات کے فروغ میں معاون نہیں ہیں۔

دفتر خارجہ کی جانب سے کہا گیا تھا کہ پاکستان افغانستان سے عدم مداخلت کے اصولوں پر تعلقات رکھنا چاہتا ہے اور پاکستان افغانستان سے قریبی اور خوشگوار تعلقات قائم رکھنے کا خواہشمند ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں