The news is by your side.

غزہ کی رہائشی عمارت میں خوفناک آتشزدگی، 7 بچوں سمیت 21 افراد جاں بحق

فلسطینی شہر غزہ کے ایک رہائشی عمارت میں خوفناک آتشزدگی کے نتیجے میں7 بچوں سمیت 21 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

عرب میڈیا کے مطابق آتشزدگی کا یہ واقعہ جبالیہ پناہ گزین کیمپ کی عمارت میں اُس وقت پیش آیا جب رہائشی ایک دعوت میں شریک تھے۔ آگ اتنی شدید تھی کہ اس نے دیکھتے ہی دیکھتے پوری عمارت کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ اس حادثے میں 21 افراد جاں بحق ہوئے ہیں جن میں 7 بچے بھی شامل ہیں جب کہ متعدد افراد جھلس کر زخمی بھی ہوئے جنہیں اسپتال منتقل کیا گیا۔

فلسطینی صدر محمود عباس نے اس واقعے کو ’قومی سانحہ‘ قرار دیتے ہوئے یوم سوگ کا اعلان کیا ہے۔

فلسطینی حکام کے مطابق یہ افسوسناک واقعہ جمعرات کو شمالی غزہ کی پٹی میں پیش آیا جہاں گنجان آباد جبالیہ پناہ گزین کیمپ میں چار منزلہ رہائشی عمارت کی بالائی منزل کو آگ نے اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ فائر فائٹرز کو آگ پر قابو پانے کے لیے ایک گھنٹے سے زیادہ کا وقت لگا۔ ایمبولینسز نے متعدد زخمیوں کو مقامی اسپتالوں میں منتقل کیا۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ وہ چیخیں سن سکتے تھے لیکن آگ کی شدت کی وجہ سے اندر  موجود افراد کی مدد نہیں کر سکے۔

فلسطین لبریشن آرگنائزیشن (پی ایل او) کی ایگزیکٹو کمیٹی کے سیکریٹری جنرل حسین الشیخ نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ ’فلسطینی اتھارٹی نے اسرائیل پر زور دیا ہے کہ غزہ کے ساتھ ایریز کراسنگ کو کھولے تاکہ زیادہ زخمی افراد کو ضرورت پڑنے پر انکلیو سے باہر لے جایا جا سکے جبکہ اسرائیل جس نے مصر کے ساتھ مل کر غزہ کی ناکہ بندی کر رکھی ہے نے کہا ہے کہ وہ ان افراد کو علاج کی اجازت دے گا جنہیں طبی امداد کی ضرورت ہے۔‘

اقوام متحدہ کے مشرق وسطیٰ کے امن مندوب نے اپنی ٹوئٹر پوسٹ میں اس واقعے میں ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ سے ’دلی تعزیت‘ کا اظہار کیا۔

غزہ کی وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ ابتدائی تحقیقات سے معلوم ہوا ہے کہ اس جگہ پر بڑی مقدار میں پٹرول ذخیرہ کیا گیا تھا جس سے آگ بھڑک اُٹھی۔

جائے حادثہ جبالیہ غزہ کے آٹھ پناہ گزین کیمپوں میں سے ایک ہے جہاں 23 لاکھ افراد رہائش پذیر ہیں اور یہ دنیا کے سب سے زیادہ گنجان آباد علاقوں میں سے ایک ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں