#ShiaGenocide
The news is by your side.

Advertisement

کراچی میں‌ فائرنگ : طالب علم اور پولیس اہلکار جاں بحق

کراچی: شہر قائد میں ایک گھنٹے کے اندر فائرنگ کے تین مختلف واقعات میں طالب علم اور پولیس اہلکار جاں بحق جبکہ 3 افراد زخمی ہوگئے جنہیں اسپتال منتقل کردیا گیا، وزیر اعلیٰ نے واقعات کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کرلی۔


Two including cop killed in Karachi by arynews

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے گلستان جوہر کے بلاک 4 میں دارالصحت اسپتال کے قریب ایک موٹر سائیکل پر  گھر واپس جاتے ہوئے تین طالب علموں پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں مرتضیٰ نامی طالب علم جاں بحق جبکہ اُس کے 2 دوست شاہد اور احسان زخمی ہوئے۔

واقعے کے بعد پولیس کی بھاری نفری جائے وقوعہ پہنچی اور تفتیش کا آغاز کیا ابتدائی معلومات کے مطابق تینوں کا تعلق شیعہ مسلک سے ہے تاہم ایس ایس پی گلشن کے مطابق فائرنگ کی وجوہات سامنے نہیں آسکیں۔

ابتدائی رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی کہ متاثرہ طالب علم کراچی یونیورسٹی اور ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں تعلیم حاصل کر رہے تھے اور کوچنگ سینٹر سے واپس گھر جارہے تھے۔

دوسری واقعہ اورنگی ٹاؤن پیر آباد تھانے کی حدود میں پیش آیا جہاں ڈکیتی مزاحمت پر 30 سالہ رشید پر گولیاں بربرسائیں گئی جبکہ تیسرا واقعہ نیو کراچی سلیم سینٹر کے قریب پیش آیا جس میں دو افراد زخمی ہوئے۔

فائرنگ کا تیسرا واقعہ سرسید تھانے کی حدود میں پیش آیا جہاں مسلح افراد پولیس اہلکار پر فائرنگ کر کے فرار ہوگئے۔ فائرنگ کا نشانہ بننے والے زخمی اہلکار کو عباسی شہید اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگیا، اہلکار کی شناخت رضوان کے نام سے ہوئی جو کرائم برانچ میں تعینات تھا۔

شیعہ مذہبی تنظیم وحدت المسلمین نے گلستان جوہر میں طالب علموں پر فائرنگ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس واقعے میں ملوث دہشت گردوں کی گرفتاری کا مطالبہ بھی کیا ہے۔

بعد ازاں وزیر اعلیٰ سندھ نے فائرنگ کے واقعات اور اس میں ہونے والی ہلاکتوں کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سندھ سے فوری رپورٹ طلب کی اور ملزمان کی فوری گرفتاری کے احکامات بھی جاری کیے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں