The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کی پہلی اوپرا سنگر

اطالوی طرز موسیقی اوپرا، موسیقی کی ایک مخصوص صنف ہے جس کے لیے بے حد محنت، ریاضت اور مشق کی ضرورت ہوتی ہے تاہم پاکستان کی سائرہ پیٹر اس مشکل صنف میں نہایت خوبصورتی سے گانے کا اعزاز رکھتی ہیں۔

پاکستان کی پہلی اوپرا گلوکارہ ہونے کا منفرد اعزاز رکھنے والی سائرہ پیٹر فی الحال لندن میں مقیم ہیں اور وہ صوفی کلام کو اوپرا طرز میں گا کر پوری دنیا میں پاکستان کی مثبت تصویر اجاگر کر رہی ہیں۔

انہوں نے شاہ عبدالطیف بھٹائی کے کلام کو اوپرا کی طرز پر انگریزی میں گایا ہے۔

اوپرا کی صنف مشرق کے لیے خاصی اجنبی ہے اور یہاں اسے جاننے، سننے اور گانے کے شوقین افراد کی تعداد بے حد کم ہے، سائرہ انہی نایاب افراد میں سے ایک ہیں۔

سائرہ نے اوپرا طرز میں گانے کے لیے صوفی کلام کو ہی کیوں چنا؟ اس بارے میں سائرہ کہتی ہیں کہ درگاہوں اور مزاروں پر پڑھے جانے والے صوفی کلام کا نہ تو کوئی مذہب ہوتا ہے اور نہ ہی کوئی فرقہ۔ یہ ہر انسان کے لیے ہے اور اس کا مقصد صرف امن کو فروغ دینا ہے۔

خوبصورت آواز کی مالک سائرہ پیٹر نے اوپرا کی تعلیم لندن سے حاصل کی ہے اور انہیں کئی زبانوں پر عبور حاصل ہے۔ وہ صرف اطالوی ہی نہیں بلکہ فرانسیسی، جرمن، لاطینی، انگریزی اور اردو زبانوں میں بھی اوپرا گاتی ہیں۔

سائرہ دنیا بھر میں اپنے فن کا مظاہرہ کر چکی ہیں اور بہت جلد ان کا البم بھی ریلیز ہونے والا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں