The news is by your side.

سعودی وزارت سول سروس میں پہلی مرتبہ خاتون تعینات

ریاض: سعودی عرب کے وزیر برائے سول سروسز سلیمان الحمدان نے ہند بنت خالد الزاہد کو سیکریٹری کے عہدے پر تعینات کردیا۔ وہ اس عہدے پر تعینات ہونے والی پہلی سعودی خاتون ہیں۔

سعودی حکومت کی خواتین کو خود مختار بنانے کی پالیسی کے تحت ایک اور اہم عہدے پر پہلی بار خاتون کو تعینات کردیا گیا۔ وزارت سول سروسز میں پہلی بار تعینات کی جانے والی ہند الزاہد نے بزنس ایڈمنسٹریشن کی ڈگری حاصل کر رکھی ہے اور وہ انتظامی امور میں 18 سال کا وسیع تجربہ رکھتی ہیں۔

وہ اس سے قبل وزارت لیبر و سماجی بہبود اور سعودی عرب کی آئل کمپنی ارامکو میں بھی خدمات انجام دے چکی ہیں۔

ہند بنت خالد نے دمام کی عبد الرحمان بن فیصل یونیورسٹی میں متعدد کمیٹیوں میں مشیر کی ذمہ داریاں بھی نبھائیں اور دمام فضائی کمپنی کے بورڈ آف ڈائریکٹر کی ذمہ داری بھی سنبھالی۔

سول سروسز کی وزارت میں خاتون کی سیکریٹری کے عہدے پر تعیناتی کا تمام حکومتی اداروں کی طرف سے خیر مقدم کیا گیا ہے اور اسے وزارت کے پروگرام کے اہداف کو بہتر بنانے کے لیے اہم پیش رفت قرار دیا جارہا ہے۔

گزشتہ ماہ امریکا میں سعودی سفیر کے عہدے پر بھی پہلی بار ایک خاتون ریما بنت بندر بن سلطان کو تعینات کیا گیا تھا۔ شہزادی ریما بنت بندر سعودی عرب میں ماس پارٹی سپیشن فیڈریشن کی صدر اور ڈیولپمنٹ پلاننگ اسپورٹس اتھارٹی میں بطور نائب اپنی خدمات انجام دے رہی تھیں۔

ریما بنت بندر کے والد بندر بن سلطان بھی سنہ 1983 سے 2005 تک امریکا میں سعودی سفیر کی حیثیت سے اپنی خدمات انجام دے چکے ہیں۔

یاد رہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان وژن 2030 کے تحت سعودی خواتین کو ڈرائیونگ اور کھیل سمیت مختلف شعبوں میں آگے لانے کے لیے کوشاں ہیں اور اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ ملکی امور میں مرد و خواتین کی یکساں شرکت ہی ملک کی ترقی کا باعث بنے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں