تھر: غذائی قلت و امراض کے باعث معصوم بچوں کی اموات کا سلسلہ تھم نہ سکا
The news is by your side.

Advertisement

تھر: غذائی قلت و امراض کے باعث مزید پانچ بچے دم توڑ گئے

تھر: سندھ کے پس ماندہ ضلع تھرپارکر میں معصوم بچوں کی اموات کا افسوس ناک سلسلہ تاحال جاری ہے.

تفصیلات کے مطابق غذائی قلت و امراض کے باعث سول اسپتال مٹھی میں زیر علاج پانچ بچے اپنی جان کی بازی ہار گئے.

سول اسپتال مٹھی کی انتظامیہ کے مطابق جاں بحق ہونے والوں میں ڈھائی سالہ ہیما بنت بھورو، نو ماہ کی مرادی بنت غفور جونیجو، اسلم لنجو، کرمن اور جمعون شامل ہیں.

اس وقت غذائی قلت کے شکار سینتالیس بچے اسپتال میں زیر علاج ہیں، جنھیں سہولیات کے فقدان کے باعث مسائل کا سامنا ہے.

واضح رہے کہ غربت و افلاس کے شکار تھر میں  رواں سال غذائی قلت اور بیماریوں کے باعث 595 بچے زندگی کی بازی ہار چکے ہیں.


مزید پڑھیں: سپریم کورٹ نے تھر میں ڈاکٹرز اور طبی عملے کی رپورٹ طلب کرلی


یاد رہے کہ صحرائے تھر میں غذائی قلت کا معاملہ اقوام متحدہ تک بھی پہنچ گیا، اقوام متحدہ کا وفد تھر کا دورہ کرنے کے لیےجلد  پاکستان پہنچے گا، وفد 5 دسمبر کو تھر کا دورہ کرے گا اور صورت حال کا جائزہ لے گا.

خیال رہے کہ حکومت کی جانب سے کیے جانے والے متعدد اقدامات کے باوجود تھر کی بحرانی صورت حال پر تاحال قابو نہیں پایا جاسکا، جس کی وجہ سے پی پی پی کی حکومت کو شدید تنقید کا سامنا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں