The news is by your side.

Advertisement

اسمارٹ فون کا زیادہ استعمال موٹاپے کا سبب

وینزویلا: ایک تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق دن میں پانچ گھنٹے یا اس سے زائد اسمارٹ فون کا استعمال آپ کو موٹا بناسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آج کی نوجوان نسل اپنا زیادہ تر وقت اسمارٹ ون کے ساتھ گزارتی ہے جس سے جسمانی سرگرمی محدود ہوکر رہ جاتی ہے، سائمن بولیوار یونیورسٹی کی تحقیقات رپورٹ کے مطابق جسمانی سرگرمی محدود ہونے سے جسم پر چربی چڑھ جاتی ہے اور موٹاپے میں بتدریج اضافہ ہوجاتا ہے۔

اسمارٹ فون کا زیادہ استعمال نہ صرف موٹاپے کا سبب بنتا ہے بلکہ اس سے نوجوانوں میں دل کا دورہ پڑنے کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔

نئی ٹیکنالوجی اور موبائل فون سے بے شمار فائدے یا خدمات حاصل کی جاسکتی ہیں تاہم اس کا زیادہ استعمال منفی رویوں کو تقویت بھی دیتا ہے۔

موبائل فون کا زیادہ استعمال خواتین میں 63.9 فیصد وزن اور مردوں میں 57.4 فیصد موٹاپے کا سبب بنا

تحقیق

اسمارٹ فون کا زیادہ استعمال قبل از وقت موت، ذیابیطس، دل کا دورہ، مختلف قسم کے کینسر، پھٹوں میں درد اور بہت سی دوسری بیماریوں کا موجب بن سکتا ہے۔

سائمن بولیوار یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق 1060 یونیورسٹی کے طالب علموں پر تجربے کے دوران یہ بات مشاہدے میں آئی کہ موبائل فون کا زیادہ استعمال خواتین میں 63.9 فیصد وزن اور 57.4 فیصد مردوں میں موٹاپے کا سبب بنا۔

تجزیہ مکمل ہونے کے بعد یہ انکشاف ہوا کہ روزانہ پانچ گھنٹے یا اس سے زیادہ دیر تک اسمارٹ فون استعمال کرنے والے نوجوانوں کے موٹاپے میں مبتلا ہونے کا خطرہ، اسمارٹ فون کم استعمال کرنے والے نوجوانوں کے مقابلے میں 43 فیصد تک زیادہ تھا۔

تجربے میں یہ بھی انکشاف ہوا کہ اسمارٹ فون استعمال کرتے وقت لوگ انرجی ڈرنکس، فاسٹ فوڈ، میٹھا استعمال کرتے ہیں، ان چیزوں کے کھانے سے بھی موٹاپا بھی بڑھ جاتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں