The news is by your side.

Advertisement

پنجاب کے نواحی علاقوں میں سیلاب، تیار فصلیں زیر آب آگئیں

لاہور: صوبہ پنجاب کے شہروں جھنگ اور بہاولپور کے نواحی علاقوں میں سیلاب نے تباہی مچا دی۔ کئی دیہاتوں میں پانی داخل ہونے سے لوگ نقل مکانی پر مجبور ہوگئے۔

ملک بھر میں ہونے والی مون سون کی بارشوں کے بعد پنجاب میں سیلاب نے تباہی مچانا شروع کردی۔

پانی کے بہاؤ اور دریاؤں کی سطح میں اضافہ ہوا تو بہاولپور میں ہیڈ سمہ سٹہ کے قریب کینال سکس ایل برانچ میں 20 فٹ چوڑا شگاف پڑ گیا۔ سینکٹروں ایکڑ پر پھیلی کپاس کی فصل زیر آب آگئی۔

بہاولپور کی بستی سپرواں اور ڈھورے وال کی آبادی میں بھی پانی داخل ہونے سے کچے پکے مکان شدید متاثر ہوئے۔

جھنگ میں بھی ڈیڑھ لاکھ کیوسک کے ریلے نے نواحی علاقوں میں تباہی مچادی۔

کئی علاقوں میں دریا کے کٹاؤ کے باعث لوگ نقل مکانی پر مجبور ہوگئے ہیں۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ سیلاب کے پیش نظر انتظامیہ نے کوئی اقدامات نہیں کیے۔

یاد رہے کہ مون سون کی بارشیں شروع ہونے کے بعد انتظامیہ نے دعویٰ کیا تھا کہ پنجاب میں سیلاب کا کوئی خطرہ نہیں، تاہم گزشتہ 2 روز میں پنجاب کے کئی نواحی علاقے اور دیہات سیلاب سے متاثر ہوچکے ہیں۔

مزید پڑھیں: طوفانی بارشوں کے بعد پنجاب میں سیلاب کا خطرہ

گزشتہ روز رنگ پور میں دریائے چناب کی نشیبی بستیوں کے لیے کروڑوں روپے کی لاگت سے بنائے جانے والے بندوں میں جگہ جگہ گڑھے پڑ گئے جس سے پانی آبادی میں داخل ہونے کا خدشہ پیدا ہوگیا۔

چنیوٹ میں بھی سیلابی ریلے سے 15 سے زائد گاؤں متاثر ہونے کی اطلاعات ہیں۔

سیلابی ریلوں نے تیار فصلوں کو بھی نقصان پہنچایا ہے جس سے غذا کی فراہمی متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔


Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں