The news is by your side.

سیلاب متاثرین کس حال میں ہیں؟ اقوام متحدہ کا سروے

اسلام آباد : پاکستان کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں متاثرین کی بقاء کا بحران بدستور برقرار ہے کیونکہ سرد موسم کے بعد ان کی مشکلات مزید بڑھ گئی ہیں، سانس کی بیماریوں اور غذائی اجناس کی کمی کی شرح میں بھی اضافہ ہورہا ہے۔

اس حوالے سے ذرائع وزارت صحت کا کہنا ہے کہ اقوام متحدہ کی جانب سے پاکستان کے سیلاب زدہ علاقوں میں سیٹلائٹ جیوگرافیکل سروے کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق ملک کے سیلاب زدہ علاقوں میں تاحال مکمل آباد کاری نہیں ہوسکی ہے، 50لاکھ متاثرین تاحال سیلاب زدہ علاقوں میں موجود ہیں جنہیں صحت و صفائی کی مناسب سہولیات دستیاب نہیں ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ صوبہ سندھ کی اگر بات کی جائے تو وہاں کے 87ہزار537 سیلاب متاثرین تاحال بے گھر ہیں، سندھ کے72لاکھ43ہزار167 سیلاب زدگان اپنے گھروں کو واپس جاچکے ہیں۔

وزارت صحت کے مطابق سندھ کے سات ٹینٹ ویلجز میں 7ہزار451 سیلاب متاثرین موجود ہیں، سیلاب زدہ علاقوں میں امراض سینہ، ملیریا اور ہیضہ کے مریض سامنے آرہے ہیں۔

بلوچستان کے بیشتر سیلاب زدہ علاقوں سے نکاسی آب مکمل ہوچکا ہے، بلوچستان کے ضلع صحبت پور کے بعض جگہوں میں سیلابی پانی موجود ہے، پاکستان میں تقریباً 40 لاکھ بچے اب بھی سیلابی پانی کے قریب زندگی بسر کر رہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں