The news is by your side.

Advertisement

‘حکومت کے پاس نواز شریف کی سزا ختم کرنے کا اختیار نہیں’

سابق وفاقی وزیر قانون ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا ہے کہ نوازشریف کی تاحیات نا اہلی کا فیصلہ سپریم کورٹ کا ہے، حکومت کے پاس ان کی سزا ختم کرنے کا کوئی اختیار نہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما ڈاکٹر بابر اعوان نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے  کہا ہے کہ نوازشریف کی تاحیات نا اہلی کا فیصلہ سپریم کورٹ کا ہے، حکومت کے پاس ان کی سزا ختم کرنے کا کوئی اختیار نہیں۔

بابر اعوان نے کہا کہ نواز شریف کو کرپشن پر سزا ہوئی جس کے خاتمے کا اختیار نیب کے پاس بھی نہیں، کرپشن میں سزا کے خلاف اپیل ہائیکورٹ میں زیرالتوا ہے، کیس ختم کرانے کیلئے نواز شریف کو اعتراف جرم کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ پلی بارگین ہوئی تو اس صورت میں نوازشریف کے تمام اثاثے ضبط ہونگے، جن میں مے فیئر اور ایون فیلڈ اپارٹمنٹس بھی شامل ہیں جب کہ نیب کے جرائم ناقابل معافی نامہ اور نان کمپاؤنڈ ایبل ہیں۔

سابق وفاقی وزیر قانون کا مزید کہنا تھا کہ آرٹیکل45 میں سپریم کورٹ کے لارجر بینچ کا فیصلہ موجود ہے، آرٹیکل45 کے تحت سزا میں کمی یا رعایت صدر کرسکتا ہے، این آر او 2 لینے والا امپورٹڈ وزیراعظم اپنے بھائی کو این آر او 3 دینے کا اختیار نہیں رکھتا۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ قوم نے رجیم چینج اور امپورٹڈ حکومت کو مسترد کردیا ہے، عوام پرامن مگر غصے میں ہیں، سب کو بروقت آنکھیں کھولنا ہوں گی، ایٹمی ملک بے یقینی میں سلیپ واک نہیں کر سکتا، آئینی بحران کے خاتمے کیلئے فوری الیکشن کے علاوہ کوئی راستہ نہیں۔

بابر اعوان نے مزید کہا کہ عمران خان ملک بھر میں 12 جلسوں سے خطاب کریں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں