The news is by your side.

Advertisement

اشتہارات کے غیر قانونی ٹھیکے، سابق وزیراعظم پر فرد جرم کی کارروائی ٹل گئی

اسلام آباد : اشتہارات کے غیر قانونی ٹھیکے کے نیب ریفرنس میں سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی پر فرد جرم کی کارروائی ٹل گئی اور عدالت نے ترمیمی آرڈیننس پرنیب کو مؤقف سے آگاہ کرنے کی ہدایت کردی۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں اشتہارات کے غیرقانونی ٹھیکوں پر نیب ریفرنس کی سماعت ہوئی ، احتساب عدالت کے جج اعظم خان نے کیس کی سماعت کی، سابق یوسف رضاگیلانی و دیگرملزمان کی عدم حاضری پرفردجرم عائد نہ ہوسکی۔

سابق پی آئی او سلیم بیگ نے نیب آرڈیننس کےتحت بریت کی درخواست کی ، جس میں مؤقف اختیار کیا کہ آرڈیننس کے تحت ریفرنس سے بری کیا جائے، جس پر نیب پراسیکیوٹر نے کہا نیب آرڈیننس حکومت نےقومی اسمبلی میں واپس لے لیا ہے، حکومت نیب آرڈیننس کے حوالے سے اعلان بھی کرچکی ہے۔

احتساب عدالت نے ترمیمی آرڈیننس پر نیب کو مؤقف سے آگاہ کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کیس کی سماعت 30 جنوری تک ملتوی کر دی۔

گذشتہ سماعت میں احتساب عدالت نے اشتہارات کے غیرقانونی ٹھیکوں پر ریفرنس میں سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی پر فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے 13  جنوری کو طلب کیا تھا۔

یاد رہے قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کے خلاف اپنے دور اقتدار میں اختیارات کے غلط استعمال کا ریفرنس درج کیا تھا۔

نیب حکام کا کہنا تھا کہ یوسف رضا گیلانی نے یو ایس ایف (یونیورسل سروس فنڈ) سے تشہیری مہم چلانے کی ہدایت کی، سابق سیکریٹری آئی ٹی فاروق اعوان نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے تشہری مہم چلائی، ملزمان کے اقدام سے قومی خزانے کو 12 کروڑ روپے کا نقصان اُٹھانا پڑا۔

قومی احتساب بیورو کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق سابق انفارمیشن سیکریٹری فاروق اعوان، سابق پبلک انفارمیشن آفیسر سلیم، حسن شیخو ، حنیف اور ریاض پر بھی سابق وزیرِ اعظم کا ساتھ دینے کا الزام ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں