site
stats
عالمی خبریں

حوثی باغیوں نے یمن کے سابق صدرعلی صالح کو قتل کردیا

یمن : حوثی باغیوں نے یمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح کو ایک جھڑپ کے دوران قتل کردیا ہے اور سوشل میڈیا پر اس کی ویڈیو بھی جاری کردی گئی ہے.

یمن کے سابق صدر کے قتل کی اطلاع حوثی باغیوں کے زیر انتظام چلنے والے ریڈیو اسٹیشن کے ذریعے نشر کی گئی تاہم آزاد ذارائع سے اس خبر کی تصدیق نہیں ہو سکی تھی جس کے بعد سوشل میڈیا پر سابق صدر کی لاش کی منتقلی کی ویڈیو بھی وائرل کی گئی جس میں انہیں مردہ حالت میں دیکھا جاسکتا ہے.

قبل ازیں سابق صدر کی جماعت پیپلز کانگریس کی قیادت نے ایک بیان میں کہا تھا کہ علی عبد اللہ صالح خیریت سے ہیں اور ایک محفوظ مقام سے حوثیوں کے خلاف لڑائی کی قیادت بھی کر رہے ہیں چنانچہ ان کے قتل کی افواہ میں کوئی صداقت نہیں ہے.

دوسری جانب صنعاء کے مکینوں نے عرب میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ سابق صدر کے مکان کے کو دھماکے سے تباہ ہوتے دیکھا گیا ہے تاہم اُس وقت سابق صدر علی صالح کہاں تھے اس کا کوئی اندازہ نہیں ہے.

خیال رہے کہ صنعاء میں ایک ہفتے سے حوثی باغیوں اور سابق صدر کی فوجیوں کے درمیان جھڑپ جاری ہیں اور حوثی باغیوں نے دارالخلافہ کے بڑے حصے پر قبضہ کرنے کا دعوی کیا ہے۔

انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے اداروں نے عرب میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا ہے کہ یمن کے دارالحکومت میں حوثیوں اور سابق صدر صالح کی فورسز کے درمیان جاری لڑائی میں 125 افراد ہلاک اور 238 زخمی ہوچکے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top