site
stats
اہم ترین

کوئٹہ میں سیکیورٹی فورسزکی گاڑی پرفائرنگ‘ 4 اہلکار شہید

Quetta attack

کوئٹہ : صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں نامعلوم مسلح افراد کی سیکیورٹی فورسز کی گاڑی پرفائرنگ کے نتیجے میں ایف سی کے 4 اہلکار شہید ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ کے علاقے لانگوآباد میں نامعلوم افراد کی سیکیورٹی فورسز کی گاڑی پرفائرنگ کے نتیجے میں ایف سی کے 4 اہلکار شہید ہوگئے۔

واقعے کے فوری بعد پولیس اور امدادی ٹیمیں موقع پرپہنچ گئیں جبکہ علاقے کو گھیرے میں لے سرچ آپریشن شروع کردیا۔

پولیس حکام کے مطابق سیکیورٹی اہلکاروں کی گاڑی گشت پر تھی کہ نامعلوم افراد نے فرنٹیئرر کور کی گاڑی پر فائرنگ کی۔


آئی جی بلوچستان معظم جاں انصاری


آئی بلوچستان معظم جاں انصاری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردوں نے آج پھر ایف سی اہلکاروں کو نشانہ بنایا۔

انہوں نے کہا کہ 3 سے 4 حملہ آوروں نے کلاشنکوف ، 9 ایم ایم پستول سے فائرنگ ایف سی اہلکاروں پر فائرنگ کی۔

آئی جی بلوچستان نے کہا کہ دہشت گردوں کے خلاف سیکیورٹی فورسزکی کارروائیاں جاری ہے، دہشت گردوں کوانجام تک پہنچائے بغیرچین سے نہیں بیٹھیں گے۔

معظم جاں انصاری نے کہا کہ عوام کے جان ومال کا تحفظ ہماری ذمہ داری ہے، کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔


بلاول بھٹو کی کوئٹہ میں سیکیورٹی فورسز پرحملے کی مذمت


پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کوئٹہ میں فورسزکی گاڑی پردہشت گرد حملےکی شدید مذمت کرتے ہوئے 4 سیکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پرافسوس کا اظہارکیا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ فورسزبہادری سے دہشت گردی کے خلاف لڑرہی ہیں، شہدا کی قربانی کبھی رائیگاں نہیں جائیں گی۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ قوم اورمسلح افواج مل کردہشت گردی کوشکست دیں گے۔


وزیراعلیٰ بلوچستان کی کوئٹہ میں سیکیورٹی فورسز پرحملے کی مذمت


وزیراعلیٰ بلوچستان عبدالقدوس بزنجو نے کوئٹہ میں سیکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پراظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے خاتمے کے لیے فورسزکی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔

انہوں نے کہا کہ شہید اہلکاروں کے پسماندگان کے دکھ میں برابرکے شریک ہیں، شہید اہلکاروں نے عوام کے جان ومال کے تحفظ کے لیے جانیں قربان کیں۔

وزیراعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ دہشت گردوں کو کیفرکردارتک پہنچایا جائے گا، دہشت گردی کے خاتمےتک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ ماہ 21 جنوری کو کوئٹہ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے کوئٹہ پولیس کے سابق ایس ایچ او فضل الرحمن جاں بحق ہوگئے تھے۔

اس سے قبل 16 جنوری 2018 کو کوئٹہ میں رئیسانی روڈ پرنامعلوم موٹرسائیکل سوار مسلح افراد کی فائرنگ سے ٹریفک پولیس اہلکار جاں بحق ہوگیا تھا۔


کوئٹہ فائرنگ، ایس پی قائدآباد سمیت 4 پولیس اہلکارشہید


یاد رہے کہ گزشتہ سال 13 جولائی کو کوئٹہ میں کلی دیبہ کے قریب مسلح افراد کی فائرنگ سے ایس پی قائدآباد سمیت 4 پولیس اہلکارشہید اور ایک زخمی ہوگیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top