صدارتی انتخاب میں ن لیگ کی ٹوٹ پھوٹ پھر عیاں ہو گئی -
The news is by your side.

Advertisement

صدارتی انتخاب میں ن لیگ کی ٹوٹ پھوٹ پھر عیاں ہو گئی

لاہور: صدراتی انتخاب کے دوران ن لیگ کی ٹوٹ پھوٹ پھر سامنے آ گئی، پنجاب اسمبلی میں مسترد شدہ اٹھارہ میں سے 12 ووٹ ن لیگی ارکان کے نکلے۔

تفصیلات کے مطابق ایک بار پھر مسلم لیگی ارکانِ اسمبلی کے اندرونی اختلافات سامنے آ گئے، اس بار صدارتی انتخاب کے موقع پر ن لیگ کی ٹوٹ پھوٹ سامنے آئی۔

پنجاب اسمبلی میں مسترد شدہ 18 میں سے 12 ووٹوں کے بارے میں جب انکشاف ہوا کہ یہ ن لیگی ارکان کے ہیں تو سوال اٹھا کہ جان بوجھ کرووٹ خراب تو نہیں کیے گئے؟

صدارتی انتخاب نے اختلافات کو طشت از بام کر دیا، ن لیگ کی صفوں میں اپنوں ہی پر انگلیاں اٹھنے لگیں، سابق صوبائی وزیرِ صحت خواجہ عمران نذیر ساتھیوں پر برس پڑے۔

حمزہ شہباز شریف کے پرانے زخم پھر سے تازہ ہوگئے، یاد رہے کہ اسپیکر کے الیکشن میں بھی بارہ ووٹ مخالف امیدوار کو پڑے تھے۔


صدارتی انتخاب 2018: عارف علوی تیرہویں صدر پاکستان منتخب ہوگئے


خیال رہے کہ صدر کے انتخاب کے لیے پاکستان تحریک انصاف کے عارف علوی، پاکستان پیپلزپارٹی کے اعتزاز احسن اور مسلم لیگ ن سمیت دیگراپوزیشن جماعتوں کی جانب سے مولانا فضل الرحمان صدارتی امیدوار تھے۔

صدارتی انتخاب میں عارف علوی نے مجموعی طور پر 353، مولانا فضل الرحمان نے 185 جب کہ اعتزاز احسن نے مجموعی طور پر 124 ووٹ حاصل کیے، اور یوں عارف علوی اسلامی جمہوریہ پاکستان کے تیرہویں صدر بن گئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں