ملک میں انتخابی اصلاحات کی طرف توجہ نہیں دی گئی، فہمیدہ مرزا -
The news is by your side.

Advertisement

ملک میں انتخابی اصلاحات کی طرف توجہ نہیں دی گئی، فہمیدہ مرزا

کراچی: گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کی رہنما اور سابق قومی اسمبلی اسپیکر فہمیدہ مرزا نے کہا ہے کہ ملک میں انتخابی اصلاحات کی طرف کبھی توجہ نہیں دی گئی۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، ان کا کہنا تھا کہ ملک میں انتخابی اصلاحات کی طرف نہ تو توجہ دی گئی نہ ہی کبھی ان پر عمل کیا گیا۔

ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے کہا کہ سندھ کو دس سال تک من مانی کر کے چلایا گیا، خیال رہے کہ گزشتہ دس برسوں میں پانچ سال وہ خود بھی پیپلز پارٹی کی طرف سے قومی اسمبلی کی اسپیکر کے عہدے پر فائز رہیں۔

ماضی میں صوبۂ سندھ میں حکومت کا حصہ ہوتے ہوئے بھی سابق اسپیکر کا کہنا تھا کہ ملک میں اداروں کی بہ جائے شخصیات مضبوط ہوئیں، اداروں کو مستحکم بنانے کی طرف کوئی توجہ نہیں دی گئی۔

انتخابات 2018 کے لیے انتخابی تیاریوں کے حوالے سے فہمیدہ مرزا نے کہا کہ انھیں اس دوران جلسوں اور ریلیوں کی اجازت نہیں دی گئی، الیکشن کی تیاریوں سے روکا گیا۔

ڈاکٹر فہمیدہ مرزا کا گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کا حصہ بننے کا اعلان

انھوں نے مزید کہا کہ انھیں پہلے ہی سے معلوم تھا کہ وہ اور ان کا خاندان نشانے پر ہے کیوں کہ ان کا انتخابی حلقہ سندھ میں بہت اہمیت رکھتا ہے۔

واضح رہے کہ فہمیدہ مرزا 2008 کے انتخابات میں حلقہ این اے 225 بدین سے پی پی کے ٹکٹ پر منتخب ہو کر قومی اسپیکر کی اٹھارویں اسپیکر منتخب ہوئیں، وہ اس عہدے پر منتخب ہونے والی پہلی خاتون تھیں۔

فہمیدہ مرزا کو پیپلز پارٹی پر الزام تراشی زیب نہیں دیتی: نفیسہ شاہ

پاکستان پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر چار بار رکن قومی اسمبلی بننے والی فہمیدہ مرزا نے اپنے شوہر ذوالفقار مرزا کے پی پی سے اختلافات کی وجہ سے، رواں برس جی ڈی اے میں شمولیت اختیار کی اور انتخابات 2018 میں ایک بار پھر اپنی سیٹ جیت لی تاہم الیکشن کمیشن نے ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے سلسلے میں اس کا نتیجہ روکا ہوا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں