تازہ ترین

فیض آباد دھرنا : انکوائری کمیشن نے فیض حمید کو کلین چٹ دے دی

پشاور : فیض آباد دھرنا انکوائری کمیشن کی رپورٹ...

حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا

حکومت کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں...

سعودی وزیر خارجہ کی قیادت میں اعلیٰ سطح کا وفد پاکستان پہنچ گیا

اسلام آباد: سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان...

حکومت کل سے پٹرول مزید کتنا مہنگا کرنے جارہی ہے؟ عوام کے لئے بڑی خبر

راولپنڈی : پیٹرول کی قیمت میں اضافے کا امکان...

نئے قرض کیلئے مذاکرات، آئی ایم ایف نے پاکستان کے لیے خطرے کی گھنٹی بجادی

واشنگٹن : آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹر کرسٹیلینا...

شدت پسندی غیر ملکی ماہر ورکرز کو خوف زدہ کر رہی ہے، جرمن بینک سربراہ نے خبردار کر دیا

برلن: جرمنی کے مرکزی بینک کے سربراہ نے خبردار کیا ہے کہ ملک میں دائیں بازو کی شدت پسندی بڑھ رہی ہے، یہ غیر ملکی ورکرز کو خوف زدہ کرتی ہے۔

جرمن میڈیا سے گفتگو میں مرکزی بینک کے سربراہ 57 سالہ یوآخم ناگیل نے کہا جرمنی میں دائیں بازو کی شدت پسندی ملک کی ترقی اور کامیابی کے لیے ایک خطرہ ہے، اور میری درخواست ہے کہ شدت پسندی کے اس خطرے کو ہلکا نہ لیا جائے۔

انھوں نے کہا دائیں بازو کی شدت پسندی سرمایہ کاروں اور باہر سے آنے والے ماہر ورکرز کو خوف زدہ کرتی ہے، اس سے ہماری ترقی اور کامیابی خطرے میں پڑ سکتی ہے۔

واضح رہے کہ جرمنی کی پارٹی آلٹرنیٹیو فار ڈوئچ لینڈ (اے ایف ڈی) نے حالیہ انتخابات میں نمایاں کامیابی حاصل کی ہے، یہ پارٹی تارکین وطن کی مخالف ہے اور انتہائی دائیں بازو کی جماعت ہے۔ جرمنی میں سیاسی پناہ حاصل کرنے والوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کے سبب جرمن ووٹرز میں بے چینی پیدا ہو گئی ہے۔

اس کے برعکس شدت پسندی کے خلاف اور جمہوریت کے لیے ریلیاں بھی نکالی جا رہی ہیں، اس سلسلے میں فرینکفرٹ میں ایک ریلی میں جرمن مرکزی بینک کے سربراہ یوآخم ناگیل بھی شریک ہوئے۔ انھوں نے کہا جرمنی "یورپ کا مرد بیمار” نہیں ہے، حالات کو زیادہ بد تر نہیں بنانا چاہیے۔

Comments

- Advertisement -