The news is by your side.

Advertisement

گیس بحران سے نمٹنے کے لئے جرمنی نے بڑا قدم اٹھالیا

ماسکو: گیس کے بڑھتے بحران سے نمٹنے کے لئے جرمنی نے بڑا فیصلہ کرلیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق سابق جرمن چانسلر گیرہارڈ شروڈر توانائی کے بارے میں بات چیت کے لیے ماسکو پہنچ گئے ہیں تاہم یہ واضح نہیں کہ سابق جرمن چانسلر کس سے ملاقات کریں گے؟۔

کریملن کے ترجمان نے صحافیوں کو بتایا کہ روسی رہنما اور سابق جرمن چانسلر کے درمیان ملاقات ممکن ہے،ذرائع کے مطابق نارڈ اسٹریم پائپ لائن کے ذریعے روسی گیس کی سپلائی بات چیت کا محور ہوگا۔

واضح رہے کہ شروڈر نے آخری بار مارچ میں ماسکو کا دورہ کیا تھا تاکہ روس کے صدر ولادی میرپوتن کے ساتھ یوکرین کی صورتحال پر بات چیت کی جا سکے، سابق جرمن چانسلر نے اس سے قبل نیویارک ٹائمز کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ “روس جیسے ملک کو طویل مدت میں سیاسی اور معاشی طور پر تنہا کرنا ناممکن ہے۔یاد رہے روس کی جانب سے یوکرین میں چوبیس فروری کو شروع کیے جانے والے فوجی آپریشن کے ردعمل میں مغربی ممالک نے روس مخالف پابندیوں کا اعلان کیا تھا جس میں روس پر متعدد پابندیوں کے علاوہ توانائی پر بھی پابندی عائد کی گئی تھی۔

روس نے ایسے ممالک کو غیر دوست ممالک قرار دیتے ہوئے گیس کی ادائیگی صرف روبل میں لینے کا فیصلہ کیا تھا، جس سے مغربی ممالک نے انکار کرتے ہوئے اس فیصلے کی مذمت کی تھی، روس نے مقررہ مدت کی ڈیڈ لائن کے بعد ان تمام ممالک کو گیس کی فراہمی روک دی تھی، جس کی وجہ سے یورپی ممالک کو توانائی کے بحران کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

اب آئندہ یورپ میں سردی کی آمد آمد ہے اور جرمنی کو گیس کی کمی کا سامنا ہے جس کی وجہ سے جرمنی میں صنعتی اور گھریلو صارفین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں