The news is by your side.

Advertisement

غیر قانونی تارکین وطن سے جرمنی تنہا نہیں لڑ سکتا، انجیلا مرکل

برلن: جرمن چانسلر انجیلا مرکل نے کہا ہے کہ غیر قانونی تارکین وطن کے تعداد کو کم کرنے کی ضرورت ہے، اس بحران سے جرمنی تنہا نمٹ نہیں سکتا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق جرمن چانسلر مرکل اور وزیر داخلہ بورسٹ زیہوفر کے درمیان تارکین وطن کے موضوع پر اختلافات شدید ہیں، ان اختلافات کی وجہ سے مرکل حکومت کے مستقبل پر سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔

زیہوفر کا تعلق باویریا میں کرسچن ڈیموکریٹک یونین کی پارٹی سی ایس یو سے ہے اور کہا جارہا ہے کہ ممکنہ طور پر یہ جماعت سی ڈی یو سے اتحاد ختم کرسکتی ہے۔

واضح رہے کہ جرمن چانسلر انجیلا مرکل کا کہنا تھا کہ 2015 میں مہاجرین کی بڑی تعداد میں آمد کی وجہ سے جرمنی تقسیم ہوا تاہم اب ایسا دوبارہ نہیں ہوگا۔

انجیلا مرکل نے کہا تھا کہ مخصوص وقت میں ایک ملین مہاجرین کو جرمنی آنے کی اجازت دینا ایک غیر معمولی استثنیٰ تھا لیکن اب ایسا دوبارہ نہیں کیا جائے گا۔

یاد رہے کہ جرمن چانسلر کا کہنا تھا کہ جرمنی مستقبل میں بھی سیاسی پناہ کے متلاشی افراد کو قبول کرے گا لیکن ساتھ ہی ایسے تارکین وطن کی ملک بدری کا سلسلہ تیز کیا جائے گا جن کی پناہ کی درخواستیں مسترد ہوچکی ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں