The news is by your side.

Advertisement

اسپین میں خشک ڈیم کی تہہ سے بھوتوں کی خوفناک وادی برآمد ہو گئی (ویڈیو)

میڈرڈ: اسپین میں ایک ڈیم کی تہہ سے بھوت گاؤں برآمد ہوا ہے، جس نے لوگوں کے دلوں پر خوف طاری کر دیا، تاہم دور دور سے سیاح اسے دیکھنے آنے لگے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اسپین اور پرتگال کی سرحد پر واقع ایک ڈیم جو شدید خشک سالی کی وجہ سے تقریباً سوکھ چکا ہے، اس کی تہہ میں ایک بھوت گاؤں مل گیا ہے، جس کے مٹیالے کھنڈرات دیکھ کر دلوں پر خوف طاری ہو جاتا ہے۔

دراصل 1992 میں اس جگہ جہاں یہ گاؤں واقع تھا، آلٹو لنڈوسو نامی ڈیم بنایا گیا تھا، اب خشک ہونے پر یہ پرانا گاؤں پھر سے دکھائی دینے لگا ہے۔

ڈیم دیکھنے کے لیے آنے والے ایک شہری نے کہا کہ ایسا لگتا ہے جیسے میں کوئی فلم دیکھ رہا ہوں، مجھے یہاں اداسی کا شدید احساس ہو رہا ہے، یہ احساس کہ سالوں کی خشک سالی اور موسمیاتی تبدیلی کی وجہ سے ایسا ہوا ہے۔

کیچڑ بھری زمین پر چلتے ہوئے سیاحوں کو اس بھوت گاؤں میں جگہ جگہ گھروں کی منہدم چھتیں، اینٹیں اور لکڑیوں کا ملبہ نظر آیا، ایسی لکڑیاں جو کبھی دروازے یا بیم کی صورت تھیں، ایک جگہ پینے کا چشمہ بھی ویسا ہی ہے تاہم اس کی پائپ زنگ آلود ہو چکی ہے۔

اس گاؤں میں ایک کیفے بھی ہوا کرتا تھا، جس کے کھنڈر میں ابھی تک بیئر کی خالی بوتلوں کے کریٹ اسی طرح رکھے ہوئے ہیں، ایک جگہ پتھر کی دیوار سے لگی ایک نیم تباہ شدہ پرانی کار بھی موجود ہے، جو زنگ کھا رہی ہے، اس گاؤں کی ڈرون فوٹیج میں خستہ حال عمارتیں ہی دکھائی دے رہی ہیں۔

واضح رہے کہ اسپین کو خشک سالی کا سامنا ہے، یکم فروری کو پرتگال کی حکومت نے بگڑتی ہوئی خشک سالی کی وجہ سے آلٹو لنڈوسو سمیت 6 ڈیموں سے بجلی کی پیداوار اور آبپاشی کے لیے پانی کے استعمال پر پابندی لگا دی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں