The news is by your side.

Advertisement

وفاقی وزیر غلام سرور کا اپنے خلاف نیب تحقیقات کا خیر مقدم

اسلام آباد : وفاقی وزیر ہوا بازی غلام سرور نے اپنے خلاف نیب تحقیقات کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا میں اپوزیشن کی طرح نیب کو برا بھلا نہیں کہوں گا، اپوزیشن کا احتساب ہورہاہے توحکومتی وزرا کا بھی ہونا چاہیے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر ہوا بازی غلام سرور نے قومی اسمبلی اجلاس میں اظہار‌ خیال کرتے ہوئے کہا کورونا سے 37ہزارلوگ بیماری کا شکار ہوئے ،803اموات ہوئیں، پوری دنیا اس موذی مرض کا شکار ہوئی ، پاکستان نے21مارچ کو ملکی وغیرملکی پروازیں معطل کیں ، حکومتی اجازت کیساتھ بین الاقوامی پروازیں شروع کیں۔

بیرون ملک پھنسے پاکستانیوں کے حوالے سے غلام سرور کا کہنا تھا کہ ہماری ترجیح تھی پاکستانیوں کو ترجیحی بنیادپر واپس لایاجائے، جن کےویزاایکسپائراورجوطلبا پھنسے تھے ان کو واپس لانا ترجیح تھی، اومان اوریو اے ای سے قیدی بلامعاوضہ پاکستان لائے گئے، سعودی عرب اور عراق زائرین واپس لائے گئے۔

وفاقی وزیر ہوا بازی نے کہا کہ ڈاکٹرز،پیرامیڈیکس فرنٹ لائن سولجر ہیں ان کی شہادتیں ہوئیں، ہم ڈاکٹرز،پیرامیڈیکس عملےکوخراج عقیدت پیش کرتے ہیں، سکینڈ فرنٹ لائن سولجر سول ایوی ایشن کے لوگ ہیں، اےایس ایف اور ایوی ایشن کے بھی 16لوگ شہید ہوئے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ان دنوں میں 181فلائٹس 27ممالک میں چلائی گئیں، ہم نے 25ہزار534 مسافروں کو اپنی منزل تک پہنچایا،14 سے 22 مئی تک پروگرام کےذریعے7ہزار پاکستانیوں کو لارہےہیں، 12 خصوصی فلائٹس امریکامیں پھنسےپاکستانیوں کولارہی ہے جبکہ 18 مئی سے 250پاکستانی بچے ووہان سے بھی واپس آرہےہیں۔

غلام سرور نے اپنے خلاف نیب تحقیقات کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا اپوزیشن کی طرح نیب کو برا بھلا نہیں کہوں گا، میری غلطی ،کوتاہی کی نشاندہی کرنیوالا میرابہترین دوست ہے، 4دہائیوں سے سیاست میں ہوں ، نیب نے جو کارروائی کرنی ہے ضرور کرے۔

وفاقی وزیر ہوا بازی کا کہنا تھا کہ نیب کو بلاتفریق احتساب کرنا چاہیے، اپوزیشن کااحتساب ہورہاہے توحکومتی وزراکابھی ہونا چاہیے، تین تین بار وزیراعظم بننےوالے ، 6، 6 بار وفاقی وزیر بننے والوں اور ملک کا پیسہ لوٹنےوالوں کا بھی احتساب ہوناچاہیے، جس جس نے گاجریں کھائی ہیں ان کے پیٹ میں ضرور درد ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ میں اور میرا خاندان گزشتہ 5دہائیوں سے سیاست میں ہے، میں تو اپنے پورے خاندان کو احتساب کیلئے پیش کررہاہوں ، میں اپنی پوری وفاقی کابینہ کو احتساب کیلئے پیش کرتاہوں، 1970 سے لیکر اب تک سب کا احتساب کیاجائے ،ایوان سے اپیل ہے تصدیق ہونی چاہیے اور انکوائری ہونی چاہیے۔

غلام سرور کا کہنا تھا کہ شرم کرو حیا کرو ، صبر کرو ،کس بات کی تکلیف ہے، دونوں ہاتھوں سے لوٹا ہے چوروں اب حالات کا مقابلہ کرو۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں