The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں سونے اور چاندی کی پیداوار میں اضافہ

ریاض: سعودی عرب میں وژن 2030 کے تحت سونے، چاندی اور تانبے کی پیداوار میں اضافہ کیا جارہا ہے، سعودی ولی عہد چاہتے ہیں کہ سعودی عرب میں معدنیات کو پیٹرول کا متبادل بنا دیا جائے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی عرب میں وژن 2030 کے باعث سونے کی پیداوار 143 فیصد بڑھ گئی ہے۔ سنہ 2016 میں سونے کی پیداوار 7.3 ہزار کلو گرام تھی جو 2019 میں بڑھ کر 12.35 ہزار کلو گرام تک پہنچ گئی۔

سعودی وژن میں کان کنی کے شعبے کے فروغ اور قومی معیشت میں اس کا حصہ بڑھانے پر توجہ مرکوز کی گئی ہے، ولی عہد چاہتے ہیں کہ سعودی عرب میں معدنیات کو پیٹرول کا متبادل بنا دیا جائے۔

وزارت توانائی کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق سنہ 2019 کے دوران سعودی عرب میں سونے کی پیداوار 5 فیصد بڑھ گئی، گزشتہ 10 برس کے دوران سعودی عرب میں سونے کی پیداوار میں 176 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

سنہ 2009 میں سعودی عرب 4.86 ہزار کلو گرام سونا نکال رہا تھا، اب یہ پیداوار بڑھ کر 7.88 ہزار کلو گرام تک پہنچ گئی ہے۔

سعودی عرب نے 2019 کے دوران چاندی کی پیداوار میں بھی 5 فیصد کا اضافہ کیا ہے۔ سعودی وژن 2030 کے بعد سے سعودی عرب میں چاندی کی پیداوار 24 فیصد بڑھی ہے، 2015 میں چاندی کی پیداوار 4.5 ہزار کلو گرام تھی۔

مملکت میں 2019 میں تانبے کی پیداوار میں بھی 5 فیصد اضافہ ہوا ہے، سعودی وژن کے بعد سے مملکت میں تانبے کی پیداوار 37 فیصد بڑھ گئی۔

سعودی عرب میں زنک کی پیداوار میں 2019 میں 5 فیصد (900 ٹن) کا اضافہ ہوا، سنہ 2018 میں زنک کی پیداوار 18 ہزار ٹن ریکارڈ کی گئی تھی جو سنہ 2019 میں بڑھ کر 18.9 ہزار ٹن ہوگئی تھی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں