شادی کی تقریب پر فضول خرچ، حکومت نے پابندی کا فیصلہ کر لیا: Wedding ceremony
The news is by your side.

Advertisement

شادیوں میں فضول خرچی، حکومت نے پابندی کا فیصلہ کر لیا

تاشقند: ازبکستان کی حکومت نے شادی بیاہ کی تقریبات میں فضول اخراجات پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے، جس کے تحت انواع اقسام کے کھانوں پر بھی پابندی ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق حکومت کی جانب سے یہ ایکشن ملک میں بڑھتے ہوئے فضول اخراجات کے پیش نظر کیا گیا ہے، تاہم اب شہریوں کو شادی کی تقریبات منعقد کرنے کے لیے حکومتی قواعد و ضوابط کی پابندی کرنا ہوگی۔

حکومت کی جانب سے جاری کررہ تحریری فیصلے کے مطابق شادی بیاہ کی تقریبات میں مہمانوں کی تعداد 150 سے زیادہ نہ ہو، انواع اقسام کے کھانے اور گوشت کا کم استعمال کرنا، تقریب میں زیادہ تعداد میں گلوکاروں جبکہ بڑی تعداد میں گاڑیاں بکنک کرانے پر بھی پابندی ہوگی۔

شاپنگ کرتے وقت پانچ عادات اپنائیں‌ اور فضول خرچ سے بچیں

حکومت کی جانب سے یہ فیصلہ ملک کے صدر شوکات مرزایوو کے حال ہی دیئے گئے بیان کے بعد سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ شادیوں میں بے دریغ پیسہ بہایا جاتا ہے جبکہ ازبکستان کے پڑوسی ملک تاجکستان میں شادیوں میں مہمانوں کی تعداد میں پابندی کا فیصلہ 2011 میں کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ ازبکستان میں اکثر شادیوں پر 20000 ڈالرز تک خرچہ آتا ہے جبکہ اس ملک میں 13 فیصد عوام غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزارتے ہیں، یہاں عام طور پر لوگوں کی تین اولادیں ہوتی ہیں اور ان کی ماہانہ آمدنی ایک سو سے تین سو ڈالر تک ہوتی ہے۔

پیسہ بچانے کے 5 راز

خیال رہے کہ حکومت کی جانب جاری کردہ تحریری فیصلوں کے بعد جہاں عوام نے حکومت کے اس اقدام کو سراہا وہیں بعض طبقوں نے حکومت کو شدید تنقید کا بھی نشانہ بنایا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیےسوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں